Thursday, September 24, 2020  | 5 Safar, 1442
ہوم   > پاکستان

احسان اللہ احسان کے دعوے مسترد،آپریشن کے دوران فرارہوا،پاک فوج

SAMAA | - Posted: Aug 13, 2020 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Aug 13, 2020 | Last Updated: 1 month ago

ترجمان پاک فوج کا کہنا ہے کہ آڈیو پیغام میں احسان اللہ احسان کی باتیں بے بنیاد ہیں، انہیں سیکیورٹی فورسز آپريشن ميں استعمال کررہی تھیں، وہ دہشتگرد آپريشن کے دوران فرار ہوا۔ میجر جنرل بابر افتخار نے میڈیا بریفنگ میں کہا کہ بھارت دہشت گرد گروپوں کو پاکستان کیخلاف استعمال کرکے خطے کو عدم استحکام کی جانب دھکیل رہا ہے، جنہیں صرف اسلحہ کے زور پر نہیں جیتی جاتیں، بھارت کے پاس 500 رافیل طیارے آجائیں، کوئی فرق نہیں پڑتا، حکومت پاکستان کی کوششوں سے مسئلہ کشمير اٹھانے کے بعد انسانی حقوق کی تنظيموں اور انٹرنيشنل ميڈيا نے بھی بدترين بھارتی دہشتگردی کو بے نقاب کيا، سی پیک کی سیکیورٹی پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہوگا، پاکستان کے سعودی عرب کے ساتھ تعلقات بہترین تھے، ہیں اور رہیں گے۔

کالعدم تحریک طالبان کے سابق ترجمان احسان اللہ احسان نے 2017ء میں سرینڈر کردیا تھا، جس کے بعد سے وہ پاک فوج کی تحویل میں تھے، ان کے حوالے سے فروری میں خبر آئی تھی کہ احسان اللہ احسان فرار ہوگئے ہیں۔

اس خبر کے پھیلنے کے بعد 17 فروری کو پاکستان کے وزیر داخلہ اعجاز شاہ نے بالآخر تصدیق کردی کہ احسان اللہ احسان پاکستان کی حراست سے فرار ہوچکے ہیں اور انہوں نے یہ بھی کہا کہ لوگوں کو اس حوالے سے جلد ہی اچھی خبر ملے گی۔

ڈائریکٹر جنرل آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار نے پریس کانفرنس میں احسان اللہ احسان کے آڈیو پیغام میں کئے گئے دعوؤں کو بے بنیاد قرار دے دیا۔ ان کا کہنا ہے کہ آپريشن ميں احسان اللہ احسان کو استعمال کيا جارہا تھا، اس کی اطلاعات سے بہت فائدہ ہوا۔

ترجمان پاک فوج نے واضح کیا کہ احسان اللہ احسان دہشت گردوں کیخلاف آپریشن کے دوران فرار ہوا، واقعے ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کررہے ہيں۔

دہشت گردی میں بھارت کا ہاتھ

ڈی جی آئی ایس پی آر ميجر جنرل بابر افتخار کہتے ہيں کہ بھارت دہشت گرد گروپوں کو پاکستان کے خلاف استعمال کرکے خطے کو عدم استحکام کی جانب دھکیل رہا ہے، پاکستان اسٹاک حملہ ہو يا منی لانڈرنگ تانے بانے بھارت سے ملتے ہيں، کلبھوشن کيس ميں ہم عالمی قوانين کا احترام کررہے ہيں، کلبھوشن کے ہاتھ معصوم پاکستانيوں کے خون سے رنگے ہيں، سی پیک کی سیکیورٹی پر کوئی سمجھوتا نہیں ہوسکتا۔

ترجمان پاک فوج نے مزید کہا کہ بھارت اسلحہ خريدنے والے ممالک ميں سرفہرست ہے، بھارت پاکستان کی صلاحيت سے مکمل طور پر آگاہ ہے، جنگيں صرف اسلحے کے زور پر نہيں جیتی جاتیں، جنگ جيتنے کيلئے عوام کی حمايت اور تعاون بہت ضروری ہوتا ہے، بھارت کے پاس 500 رافیل طیارے آجائیں، کوئی فرق نہیں پڑتا۔

سعودی عرب کے ساتھ تعلقات

ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار نے سعودی عرب سے متعلق کہا کہ مسلم امہ ميں سعودی عرب کی مرکزی حيثيت سے کوئی انکار نہيں کرسکتا، پاکستان کے سعودی عرب کے ساتھ تعلقات بہترین تھے، ہیں اور رہیں گے، ان تعلقات پر قوم کو فخر ہے۔

مقبوضہ کشمیر

ترجمان پاک فوج نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں غیر قانونی محاصرہ ایک سال سے جاری ہے، بھارت منصوبے کے تحت کشمیر سے مسلمانوں کو بیدخل کرنا چاہتا ہے، کوئی ظلم ایسا نہیں جو کشمیریوں پر نہ آزمایا جارہا ہو، نوجوانوں کو شہید کرکے نامعلوم مقامات پر دفن کیا جارہا ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ حکومت پاکستان کی جانب سے ہر فورم پر مسئلہ کشمير اٹھانے کے بعد انسانی حقوق کی تنظيموں اور انٹرنيشنل ميڈيا نے بھی بدترين بھارتی دہشتگردی کو بے نقاب کيا، کشميريوں کی جدوجہد ضرور کامياب ہوگی۔

ڈی جی آئی ایس پی آر نے اقوام متحدہ کے سيکريٹری جنرل نے انسانی حقوق کی پاسداری پر زور ديا۔

جشن آزادی کی مبارکباد

میجر جنرل بابر افتخار نے قوم کو آزادی کے 73 سال مکمل ہونے پر مبارک دی، ان کا کہنا تھا کہ بلاشبہ آزادی ایک بہت بڑی نعمت ہے، آزاد وطن کی بنیادوں میں شہداء کا خون شامل ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube