Thursday, January 28, 2021  | 13 Jamadilakhir, 1442
ہوم   > پاکستان

بلوچستان: بارشوں سےندی نالوں میں طغیانی،8 افراد جاں بحق

SAMAA | - Posted: Aug 9, 2020 | Last Updated: 6 months ago
SAMAA |
Posted: Aug 9, 2020 | Last Updated: 6 months ago

سیلاب اور بارشوں سے 21 اضلاع متاثر

بلوچستان میں طوفانی بارشوں سے تباہی، ندی نالوں ميں طغيانی اور مختلف حادثات میں 8 افراد جاں بحق ہوگئے۔

بلوچستان میں مون سون کی موسلا دھار بارشوں نے تباہی مچا دی۔ حب میں سیلابی ریلے میں پھنسے شہریوں کو ریسکیو کرلیا گیا۔ گوادر میں مکران کوسٹل ہائی وے پر برساتی نالے میں شگاف نے کئی ایکڑ زمین کو دبو دیا، جس کے بعد گوادر کا کراچی اور لسبیلہ سے زمینی رابطہ منقطع ہوگیا۔ پسنی میں کوسٹل ہائی وے پل ریلے میں بہہ گیا۔ خضدار کے تفریحی مقام پر سیاح پھنس گئے، جنہیں بعد ازاں پاک فوج کی مدد سے ریسکیو کر کے نکال لیا گیا۔ صوبے میں ہونے والی شدید بارشوں سے کوہلو میں نشیبی علاقے بھی زیرآب آگئے۔

حکام کا کہنا ہے کہ صوبے کے 21 اضلاع بارشوں سے شدید متاثر ہوئے ہیں۔ جعفر آباد، ڈیرہ بگٹی اور خضدار میں بچوں سمیت 8 افراد جاں بحق ہو گئے ہیں۔ آواران اور پنجگور میں بھی ہر طرف پانی ہی پانی نظر آرہا ہے، حب کے قریب ریلے میں پھنسے سیاحوں کو نکال لیا گیا۔

دوسری طرف سیلابی پانی سے بی بی نانی پل میں شگاف پڑ گیا، کوئٹہ کا سندھ پنجاب سے زمینی رابطہ منقطع ہوگیا۔ برساتی ریلے سے بی بی نانی کے مقام پر پل میں شگاف پڑ گیا، شگاف پڑنے سے پل کاایک حصہ مکمل تباہ ہو گیا، سندھ پنجاب کی کوئٹہ کیلئے شاہراہ ہرقسم کی ٹریفک کے لیے بند کر دی گئی۔ ڈیرہ بگٹی میں مختلف علاقوں میں 4 سے 5 فٹ پانی لوگوں کے گھروں میں داخل ہوگیا۔ انتظامیہ نے لوگوں کو محفوظ مقامات پر منتقل کردیا، تاہم سیلابی ریلے میں لوگوں کا سامان اور کھانے پینے کی اشیاء بہہ کر تباہ ہوگئی۔

خضدار کے علاقے مولا میں سیر کے لئے جانے والے 100 افراد کو بحفاظت نکال لیا گیا ہے۔ بولان میں بی بی نانی کے پل اور کوسٹل ہائی وے پر روڈ کو نقصان پہنچا۔ درہ بولان میں اونچے درجے کا سیلاب ہے اور کرتہ کے علاقے میں کچھ لوگ پھنسے ہوئے ہیں۔ جن کو نکالنےکرنے کے لئے امدادی کارروائیاں جاری ہیں۔

محکمہ موسمیات نے موجودہ بارشوں کا سلسلہ اتوار تک جاری رہنے کا الرٹ جاری کیا ہے ۔ بارشیں قلات، خضدار، لسبیلہ، آواران، پنجگور، کیچ اور گوادر میں ہونے کا امکان ہے ۔ پی ڈی ایم اے کی جانب سے متاثرہ اضلاع کے لئے امدادی سامان روانہ کر دیا گیا ہے۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کی طرف سے جاری بیان کے مطابق سندھ میں حالیہ عرصے کے دوران ہونے والی بارشوں سے نائی گج ڈیم کوشدید نقصان ہے۔ ڈیم کے فلڈ پروٹیکشن بند میں شگاف پڑ گیا۔ شگاف پڑنے سے ضلع دادو کے 12دیہات بری طرح متاثر ہوئے۔ ترجمان کے مطابق شدید نقصان پہنچنے پر پاک فوج امدادی کارروائیوں کے لیے متاثرہ علاقوں میں پہنچ گئی ہے۔ آرمی انجینیرز، موٹر بوٹس، میڈیکل ٹیمیں امداد کیلئے پہنچ گئے ہیں۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube