Monday, September 28, 2020  | 9 Safar, 1442
ہوم   > پاکستان

موجودہ نیب کے ساتھ ملک کا چلنا ناممکن ہے، اپوزیشن

SAMAA | - Posted: Jul 30, 2020 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Jul 30, 2020 | Last Updated: 2 months ago

حکمران اپنا نیب اوراین آراو اپنے پاس رکھیں

متحدہ اپوزیشن نے موجودہ نیب کے ساتھ ملک کا چلنا ناممکن قرار دے دیا، حزب اختلاف کے رہنماء بولے کہ حکومت پھنس جائے تو مخالفین سے بھیک مانگتی ہے، حکمران اپنا نیب اور این آر او اپنے پاس رکھیں۔

جمعرات کو سینیٹ کا اجلاس چیئرمین صادق سنجرانی کی زیرِ صدارت ہوا، جس میں مسلم لیگی سینیٹر جاوید عباسی نے انسداد دہشتگردی ایکٹ ترمیمی بل 2020ء اور اقوام متحدہ سلامتی کونسل ترمیمی بل 2020ء پیش کیا، حکومت اور اپوزیشن ارکان نے شق وار کثرت رائے سے بل کی منظوری دیدی۔

متحدہ اپوزیشن نے موجودہ نیب کو ناقابل قبول قرار دیتے ہوئے حکومت پر واضح کیا ہے کہ وہ اپنا نیب اور این آر اپنے پاس رکھیں۔

سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے پریس کانفرنس میں حکومت سے ہونیوالے مذاکرات کی کہانی سنائی، بولے حکومت چاروں بل اکٹھے منظور کروانا چاہتی تھی۔

پیپلزپارٹی سینیٹر شیری رحمان نے حکومت کو تباہی سرکار قرار دیتے ہوئے حکمرانوں پر پارلیمنٹ کے غلط استعمال کا الزام لگادیا۔ انہوں نے کہا کہ اپنا نیب اپنے پاس رکھیں، سارے بھگت چکے ہیں، ہم نے ان سے کوئی رعایت نہیں مانگی، ترمیم کرکے اپنا فریضہ ادا کردیا۔

ان کا کہنا تھا کہ حکومت پارلیمان کو حقارت کی نظر سے دیکھتی ہے، ملک ایگزیکٹو آرڈر سے نہیں چلے گا۔

جمعیت علمائے اسلام (ف) کی رہنماء شاہدہ اختر علی نے کہا کہ حکومت نے تمام پارلیمانی طریقے بلڈوزر کردیئے، یہ لوگ جہاں پھنس جاتے ہیں اپوزیشن سے بھیک مانگنے لگتے ہیں، بتایا جائے ان سے کس نے این آر او مانگا۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube