Monday, August 10, 2020  | 19 Zilhaj, 1441
ہوم   > پاکستان

لاہور:ماحول دوست مصنوعی جنگل اُگانےکےمنصوبےپرکام جاری

SAMAA | - Posted: Jul 14, 2020 | Last Updated: 4 weeks ago
SAMAA |
Posted: Jul 14, 2020 | Last Updated: 4 weeks ago

پودے لگائےجارہےہیں جو 3 سے4 سال میں ہی درخت بن جاتےہیں

لاہورمیں ماحول کی بہتری کےلیے مصنوعی جنگل اگانے کے منصوبے پرکام جاری ہے۔جاپانی طریقہ کار کے تحت پارکس اور سڑکوں کے گرد پودے لگائے جارہے ہیں جو 3 سے 4 سال میں ہی درخت بن جاتے ہیں۔

میا واکی جنگل لگانا ایسا طریقہ ہے جس میں چھوٹی جگہ پر ایسے پودے لگائے جاتے ہیں جو کم وقت میں سایہ دار درخت بن جاتے ہیں۔یہ جاپانی طریقہ شہروں میں آلودگی کی شرح کم کرکے لوگوں کو صاف ستھرا ماحول دینے کے لیے اپنایا گیا ہے۔

لاہور میں تھوڑے تھوڑے فاصلے پر پودے لگا کرگھنے جنگل اُگانے کا مقصد شہرمیں ٹریفک سے پھیلی کاربن کےمقابلے میں آکسیجن کی پیداوار بڑھانا ہے۔

پارکس اینڈہارٹیکلچراتھارٹی نےلاہورکے50 مقامات پراس طرح کے چھوٹے مصنوعی جنگل لگانے کا منصوبہ تیار کیا ہے۔

سایہ دار درخت اُگانےکےلیے زیادہ ترپھلوں اور پھولوں کے پودے لگائے جارہے ہیں جن میں آم،جامن، سہانجنا اور دن کا راجا سمیت 35 اقسام شامل ہیں۔

مصروف شاہراؤں کےگرد بنی گرین بیلٹس کے ساتھ پارکس میں بھی میاواکی جنگل لگائے جا رہے ہیں۔حکام کے مطابق 3 سے 4 سال میں یہ پودے گھنے درختوں میں تبدیل ہوجائیں گے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube