Wednesday, August 5, 2020  | 14 Zilhaj, 1441
ہوم   > پاکستان

کوئٹہ غیرقانونی تعمیرات:فریقین کوعدالتی نوٹسزجاری

SAMAA | - Posted: Jul 8, 2020 | Last Updated: 4 weeks ago
SAMAA |
Posted: Jul 8, 2020 | Last Updated: 4 weeks ago

بلوچستان ہا ئی کورٹ نےکوئٹہ شہر میں بلڈنگ کوڈ کےخلاف تعمیرہونےوالی بلند و بالاعمارتوں سےمتعلق فریقین کونوٹسز جاری کرتے ہوئےطلب کرلیا۔

سینئر قانون دان سید نذیرآغا ایڈووکیٹ کی جانب سے کوئٹہ میں بلڈنگ کوڈ کے خلاف تعمیر ہونے والی بلند و بالا عمارتوں سے متعلق دائر آئینی درخواست کی سماعت بلو چستان ہا ئی کورٹ کے چیف جسٹس جسٹس جما ل خان مندوخیل اور جسٹس جسٹس نذیر احمد لا نگو پر مشتمل بنچ نے کی۔

دوران سماعت درخواست گزار سید نذیر آغا ایڈووکیٹ نے موقف اختیا رکیا کہ کوئٹہ شہر زلزلے کے ریڈ زون میں واقع ہے لیکن اس کے باوجود شہر کے وسطی اور نواحی علاقوں میں بلڈنگ کوڈ کے خلاف بلند و بالا عمارتیں تعمیر کی جارہی ہیں،نہ صرف تعمیر کی جانے والی عمارتیں مقررہ حد سے زیادہ اونچی ہوتی ہیں بلکہ اب تک کوئٹہ شہر میں 6سے 7منزلہ عمارتوں کی تعمیر کا سلسلہ بھی شروع ہوچکا ہے۔ اس کے علاوہ ڈبل تہہ خانے بھی بنائے جارہے ہیں بلکہ تہہ خانوں میں ٹیوب ویل بھی لگا ئے گئے ہیں،تعمیر کی جا نی والی عما رتیں 40سے 60فٹ تک بلند ہوا کر تی ہے جس کی وجہ سے کسی بھی وقت ناخوشگوار صورتحال کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے اور کسی بھی عمارت کے منہدم ہونے کے نتیجے میں انسانی جانوں کے نقصان ہوسکتا ہے۔

انہوں نے عدالت کو بتایا کہ 2008میں آنے والے زلزلے کے نتیجے میں کوئٹہ شہر کے اندر ایک سو 24عمارتوں کو نقصان پہنچا تھا ۔ انہوں نے بتایا کہ بلند و بالا عمارتوں کی کھڑکیاں رہائشی علاقوں کی طرف لگائی جاتی ہے جو اسلامی اور قبائلی روایات کی کھلم کھلا خلاف ورزی ہے،اس لئےعدالت حکومت ، میٹروپولیٹن کارپوریشن و دیگر متعلقہ حکام کو طلب کرکے اس سلسلے میں احکامات دیں جس پر عدالت نے آئینی درخواست کو قابل سماعت قرار دیتے ہوئے فریقین کو نوٹسز جاری کرنے کے احکامات صادر کئے بعد ازاں آئینی درخواست کی سماعت 2ہفتے بعدتک ملتوی کردی۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube