Wednesday, July 8, 2020  | 16 ZUL-QAADAH, 1441
ہوم   > پاکستان

ڈینیئل پرل کیس: سندھ حکومت کی عدالتی حکم کیخلاف استدعامسترد

SAMAA | - Posted: Jun 29, 2020 | Last Updated: 1 week ago
Posted: Jun 29, 2020 | Last Updated: 1 week ago

سپریم کورٹ نے ڈینیئل پرل قتل کیس میں سندھ حکومت کی حکم امتناع کی استدعا مسترد کردی۔ عدالت عالیہ نے مرکزی ملزم عمر شیخ کی سزائے موت کو 7 سال قید میں تبدیل کردیا تھا۔

انسداد دہشت گردی کی عدالت نے کراچی میں 2002ء میں امریکی صحافی ڈینیئل پرل کے قتل سے متعلق مقدمے میں احمد عمر سعید شیخ کو سزائے موت جبکہ سلمان ثاقب، شیخ عادل اور فہد نسیم کو عمر قید کی سزا سنائی تھی، ہائیکورٹ نے عمر شیخ کی سزا کو 7 سال قید میں تبدیل کردیا تھا۔

سندھ حکومت نے ہائیکورٹ کے فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کیا تھا، جس پر عدالت عظمیٰ نے آج فیصلہ سناتے ہوئے صوبائی حکومت کی حکم امتناع کی استدعا کو مسترد کردیا۔

کیس کی سماعت کے دوران حکومتی وکیل فارق ایچ نائیک نے کہا ملزمان بین الاقوامی دہشتگرد ہیں، جنہیں ایم پی او کے تحت حراست میں رکھا گیا ہے، ایک ملزم بھارت، دوسرا افغانستان میں دہشتگرد تنظیم کے ساتھ کام کرتا رہا، ملزم آزاد ہوئے تو سنگین اثرات ہوسکتے ہیں۔

جسٹس یحییٰ آفریدی نے ریمارکس دیئے کہ ملزموں کی بریت کے بعد آپ ان کو کیسے دہشتگرد کہہ سکتے ہیں؟، ذہن میں رکھیں ملزمان کو ایک عدالت نے بری کیا ہے۔

جسٹس مشیر عالم بولے فیصلے میں کوئی سقم ہو تب ہی معطل ہوسکتا ہے، حکومت چاہے تو ایم پی او میں توسیع کرسکتی ہے۔

ملزمان کے وکیل نے دلائل دیئے کہ ملزمان نے 18 سال سے سورج نہیں دیکھا، حکومت میں خدا خوف ہونا چاہئے۔

عدالت عظمیٰ نے ملزمان کی بریت کا حکم معطل کرنے کی استدعا مسترد کرتے ہوئے سماعت ستمبر تک ملتوی کردی۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube