Saturday, July 4, 2020  | 12 ZUL-QAADAH, 1441
ہوم   > پاکستان

محکمہ صحت کے حکام عارضی چارج پر چل رہے ہیں،مریم اورنگزیب

SAMAA | - Posted: Jun 2, 2020 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Jun 2, 2020 | Last Updated: 1 month ago

ن لیگی ترجمان مریم اورنگزیب نے دعویٰ کرتے ہوئے کہا ہے کہ ڈائریکٹر جنرل ہیلتھ عارضی چارج پر چل رہے ہیں، جب کہ رگ ریگولیٹری اتھارٹی (ڈریپ) بھی عارضی انتظام پر چلائی جارہی ہے۔

منگل 2 جون کو اپنے بیان میں پاکستان مسلم لیگ ن کی ترجمان مریم اورنگزیب کا کہنا تھا کہ پمز، پولی کلینک، فیڈرل گورنمنٹ ہاسپٹل، نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ری ہیبیلیٹیشن میڈیسن ابھی تک عارضی چارج پر چل رہے ہیں۔ پولی لنک میں صرف 4 کرونا کیسز کے لیے وینٹیلیٹرز ہیں اور ایک بھی اضافی وینٹیلیٹر نہیں دیا گیا، جب کہ فیڈرل گورنمنٹ ہاسپٹل کو آج تک کرونا مریضوں کے لیے تیار نہیں کیا گیا ہے۔

اسلام آباد کےاسپتالوں میں وینٹیلیٹرز اور ڈاکٹرز کےحفاظتی اقدامات کی عدم موجودگی پر شدید مذمت کرتے ہوئے ن لیگی ترجمان کا کہنا تھا کہ کل نشاندہی پر 14 وینٹی لیٹرز پمز آئیسولیشن وارڈ میں منتقل ہوئے جو فنکشنل نہیں ہیں، ہنگامی طور پر منتقل کیے گئے وینٹی لیٹرز کے ساتھ مطلوبہ کارڈیک مانیٹر اور انفیوشن پمپس موجود نہیں ہیں۔

مریم اورنگزیب کا کہنا تھا کہ خدا کا واسطہ ہے صحت پر سیاست نہ کریں لوگوں کی زندگیوں کا معاملہ ہے اِس پر تو سچ بولیں، اسپتالوں میں صرف کرونا آئیسولیشن وارڈز کے ڈاکٹرز اور طبی عملے کو پی پی ایز دینا غلط پالیسی ہے۔ پمز اور پولی کلینک اسپتال کے دیگر شعبہ جات کے ڈاکٹر اور طبی عملے کو بھی پی پی ایز دی جائیں۔

ترجمان مسلم لیگ ن نے کہا کہ غلط پالیسی کے سبب ڈاکٹر، نرسز اور طبی عملہ کرونا کا شکار ہو رہا ہے، جس کی ذمہ دار حکومت ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube