Friday, October 23, 2020  | 5 Rabiulawal, 1442
ہوم   > پاکستان

مارگلہ ہلز کی توڑپھوڑ کی اجازت نہیں دیں گے،سپریم کورٹ

SAMAA | - Posted: Jun 1, 2020 | Last Updated: 5 months ago
Posted: Jun 1, 2020 | Last Updated: 5 months ago

سپریم کورٹ کے چیف جسٹس گلزار احمد نے مارگلہ ہلز میں کرشنگ پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ریسٹورنٹس کو آئندہ ہفتے تک جواب جمع کرانے کا حکم دے دیا۔

سپریم کورٹ میں مارگلہ ہلز پر تعمیرات سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس نے کہا کہ بفرزون گرین ایریا میں دو یونیورسٹیاں بنی ہوئی ہیں۔ ماڈل جیل اسلام آباد کے گرین زون میں کیوں بنائی جا رہی ہے۔ سی ڈی اے رپورٹ کے مطابق بفرزون گرین ایریا کو وزیراعظم نے کم کیا۔ بتایا جائے 2008 میں وزیراعظم نے یہ حکم کیسے دیا۔ وزیراعظم کے گرین زون تبدیل کرنے کے اختیارکا جائزہ لیں گے۔

چیف جسٹس نے کہا کہ اسلام آباد کا پھیلاؤ کیوں نہیں روکا جا رہا۔ کیا اسلام آباد کو پشاور اور لاہور سے ملانا ہے۔ عدالت نے گرین زون میں تبدیلی سے متعلق تمام دستاویزات پیش کرنے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ ضرورت پڑی تو گرین زون کی تعمیرات مسمارکرنے کا حکم بھی دیں گے۔

چیف جسٹس نے مارگلہ ہلز پر کرشنگ اور اسلام آباد میں غیر قانونی پارکنگ پر بھی برہمی کا اظہار کیا۔ عدالت کے پوچھنے پر چیئرمین سی ڈی اے نے بتایا کہ شہر کے ماسٹر پلان میں پیسوں کےعوض پارکنگ کی گنجائش نہیں۔ چیف جسٹس نے کہا کہ کیوں نہ پیسوں کےعوض ہونیوالی پارکنگ پرحکم امتناع جاری کردیں۔

سپریم کورٹ نے یہ بھی واضح کہا کہ مارگلہ ہلز کی توڑ پھوڑ کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

دوران سماعت کمرہ عدالت لوگوں سے بھر گیا تو چیف جسٹس نے کہا کہ سماجی فاصلہ کیوں نہیں رکھا جا رہا۔ کمرہ عدالت میں صرف وہی لوگ رکیں جن کا کیس ہے۔ وکلا اورصحافیوں کو بھی ایک ایک نشست چھوڑ کر بیٹھنے کی ہدایت کر دی۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube