Wednesday, July 8, 2020  | 16 ZUL-QAADAH, 1441
ہوم   > پاکستان

طیارہ حادثے میں تباہ مکانوں سے ملبہ نہیں اُٹھایا جاسکا

SAMAA | - Posted: Jun 1, 2020 | Last Updated: 1 month ago
Posted: Jun 1, 2020 | Last Updated: 1 month ago

طیارہ حادثے میں تباہ حال مکانوں سے ملبہ نہیں اُٹھایا جاسکا۔ تباہ شدہ طیارے کا ایک ونگ اور انجن بھی گھروں میں دھنسا ہواہے۔ ایس بی سی اے کی ٹیم متاثرہ گھروں کا باہر سے معائنہ کرکے چلی گئی۔

طیارہ حادثے کو تیرہ روز گزرنے کے باوجود بدقسمت طیارے کا کچھ ملبہ گھروں میں موجود

ہے۔ طیارےکا ایک ونگ اور انجن مکانات میں دھنسا ہوا ہے۔ ونگز اور انجن اُٹھانے سے مکانات گِرنے کا خدشہ ہے۔ ایک ویل بھی تباہ حال اسکول کے ملبے میں دبا ہوا ہے۔

سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی (ایس بی سی اے) کی جائزہ کمیٹی نے بھی جائے حادثہ کادورہ کیا لیکن ڈی سی کا اجازت نامہ لیے بغیر ماڈل کالونی جانیوالے حکام پانچ منٹ بعد ہی واپس آگئے مگر اونچی عمارتوں کی تعمیرکا ملبہ بھی سول ایوی ایشن اور ایئر فورس پر ڈال دیا۔

جائزہ ٹیم نے کہا کہ ایئرپورٹ کے اطراف اونچی عمارتوں کی اجازت سول ایوی ایشن اتھارٹی نے دی ہے۔

دوسری جانب فرانسیسی ماہرین اپنی تحقیقات مکمل کرکے پیرس روانہ ہوگئے جہاں کاک پٹ وائس ریکارڈر اور ڈیٹا ریکارڈر کو ڈی کوڈ کیا جائے گا جس سے حادثے کی اصل وجہ جاننے میں مدد ملےگی۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube