Sunday, September 20, 2020  | 1 Safar, 1442
ہوم   > پاکستان

کرونا وائرس کے باعث شہد کی پیداوار بھی متاثر

SAMAA | - Posted: May 23, 2020 | Last Updated: 4 months ago
SAMAA |
Posted: May 23, 2020 | Last Updated: 4 months ago

پیداوار میں 40 فیصد کمی ہوگئی، مگس بان

خیبرپختونخوا میں کرونا وائرس نے شہد کی پیداوار کو شدید متاثر کیا ہے، لاک ڈاؤن کے باعث مکھیوں کی بروقت نقل و حرکت نہ ہونے سے پیداوار میں 40 فیصد تک کمی ہوگئی۔

کرونا وائرس کے باعث لاک ڈاؤن کے نتیجے میں شہد کی مکھیوں کو بروقت باغوں اور پہاڑی علاقوں تک منتقل نہ کیا جاسکا، جس کی وجہ سے شہد کی پیداوار 30 ہزار ٹن سے کم ہوکر 20 ہزار ٹن تک رہ گئی ہے۔

شہد کے تاجروں کا کہنا ہے کہ لاک ڈاؤن کی وجہ سے ورکرز بھی گھروں پر محصور ہوگئے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ سونامی ٹری پراجیکٹ میں پھول دار درخت لگا کر شہد کی پیداوار اور روزگار میں اضافہ کیا جاسکتا ہے۔

سینئر نائب صدر ہنی ٹریڈرز اینڈ ایکسپورٹرز شیخ گل بادشاہ کہتے ہیں کہ ایسے جنگلات لگائیں جو پھول دیتے ہیں، ماحولیاتی تبدیلی کی وجہ سے یہ کیڑا خطرے سے دوچار ہے۔

خیبرپختونخوا کی بیری شہد کی مانگ پوری دنیا میں ہے جبکہ پہاڑی پھولوں، شیشم، پلئی، سرسوں کے شہد بھی پسند کئے جاتے ہیں

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
KP, HONEY, HONEY BEE, PAKISTAN, LOCKDOWN, CORONAVIRUS, COVID-19, COVID19,
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube