Saturday, July 4, 2020  | 12 ZUL-QAADAH, 1441
ہوم   > پاکستان

راجن پور:پولیس تشدد سےشخص کی ہلاکت، 7اہلکاروں پرقتل کامقدمہ درج

SAMAA | - Posted: May 20, 2020 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: May 20, 2020 | Last Updated: 2 months ago

پولیس نے عیدی کیلئے ایک لاکھ روپے طلب کیے

راجن پور میں پولیس تشدد سے شخص کی ہلاکت پر 4 روز بعد ایس ایچ او سمیت 7 پولیس ملازمین پر قتل، ڈکیتی اور اغواء کا مقدمہ درج کر لیا گیا۔

چار روز قبل سٹی پولیس جام پور تھانہ صدر کی حدود میں رات کی تاریکی میں ایک شخص ملازم حسین مکول کے گھر میں گھسی اور مقتول کو گرفتار کرکے مال مویشی اور موٹر سائیکل بھی ساتھ لے گئے۔ تھانے میں تشدد سے ملازم حسین موقع پر ہی جاں بحق ہوگیا۔

بیوہ کا کہنا ہے کہ سحری کا وقت تھا پولیس ہمارے گھر میں داخل ہوئی۔ مجھے دھکے دیے اور میرے شوہر کو گرفتار کیا جبکہ موٹر سائیکل اور مال مویشی بھی ساتھ لے گئے۔ دوسرے دن اطلاع ملی کہ میرے شوہر کو انہوں نے تشدد سے ہلاک کر دیا۔

مقتول کے بھائی کا کہنا تھا کہ بھائی کو چھڑانے تھانے گئے تو پولیس نے عیدی کے لیے ایک لاکھ روپے طلب کیے۔ نہ دینے پر ہمارے سامنے منہ میں پانی والا پائپ ڈال کر موٹر چلا دی جس سے میرے بھائی کی موقع پر موت واقع ہوگئی۔

پولیس نے دل کا دورہ پڑنے کا کہہ کر لاش پوسٹ مارٹم کے لیے ڈی ایچ کیو اسپتال راجن پور مںتقل کی جس پر متاثرہ خاندان نے اسپتال کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا۔

 ڈی پی او راجن پور نے نوٹس لیتے ہوئے ایس پی انویسٹی گیشن کو انکوائری افسر مقرر کرکے کمیٹی تشکیل دے دی جس نے پوسٹ مارٹم کی رپورٹ میں تشدد ثابت ہونے پر ایس ایچ او سمیت 7 پولیس اہلکاروں پر قتل، اغواء اور ڈکیتی کی دفعات کی روشنی میں مقدمہ درج کرلیا۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube