Sunday, July 5, 2020  | 13 ZUL-QAADAH, 1441
ہوم   > پاکستان

کروناوائرس سے ہزارہ ڈویژن میں سیاحت کی رونقیں ماند پڑگئیں

SAMAA | - Posted: May 19, 2020 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: May 19, 2020 | Last Updated: 2 months ago

فوٹو: سماء ڈیجیٹل

کرونا وائرس کے باعث جہاں زندگی کا ہر شعبہ متاثر ہوا ہے وہاں پر ہزارہ ڈویژن میں سیاحت کی رونقیں ماند پڑ گئیں۔ ہوٹلنگ سے وابستہ ہزاروں افراد بیروگاری کی وجہ سے فاقہ کشی پر مجبور ہوگئے۔

مئی، جون، جولائی اور اگست میں ہزارہ ڈویزن کے سیاحتی مقامات اور ناران کی وادیاں سیاحوں کا مرکز ہوتی ہیں تاہم کرونا وائرس کے پیش نظر دو ماہ سے شوگران اور ناران بابوسر ٹاپ میں تمام سیاحتی سرگرمیاں مکمل بند ہیں۔ ہوٹل مالکان، ٹھیکدار، جیپ ڈرائیور اور گائیڈ سخت پریشان ہیں۔

ٹورسٹ گاہیڈ وسیم کا کہنا ہے کہ کرونا کے باعث کام متاثر ہوا حکومت عید کے بعد سیاحتی مقامات کو کھولے تاکہ شہریوں کو روزگار مل سکے۔

جیپ مالک کا کہنا کہ دو ماہ سے لاک ڈاون ہے، ہمارا ذریعہ معاش سیاحت ہے لیکن ہزاروں افراد بے روزگار ہوگئے ہیں۔ گھروں کے چولہے بند ہوگئے ہیں عمران خان سیاحت کو بحال کریں۔

وادی کاغان کی 90 فیصد آبادی سیاحت کے کاروبار سے جڑی ہوئی ہے۔ سیاحتی مقامات بند ہونے سے یہاں کے لوگوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube