Tuesday, July 7, 2020  | 15 ZUL-QAADAH, 1441
ہوم   > پاکستان

ناقص انتظامات پر پشاور اسپتال کے دو سینئر ڈاکٹرز مستعفیٰ

SAMAA | - Posted: May 16, 2020 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: May 16, 2020 | Last Updated: 2 months ago

کرونا کے حوالے سے ناقص انتظامات پر لیڈی ریڈنگ اسپتال پشاور کے دوسینئر ڈاکٹروں نے استعفے دے دیے۔

آئی سی یو کی انچارج ایسوسی ایٹ پروفیسر عائشہ مفتی اور آئی سی یو اسپشلسٹ نے اسپتال انتظامیہ کے پاس استعفے جمع کرادیے۔

ڈاکٹر عائشہ مفتی نے اپنے استعفے کی وجوہات میں بتایا ہے کہ اسپتال انتظامیہ کرونا وائرس وباء کے لیے بلکل تیار نہیں تھی اور نہ ہی ان کے پاس کوئی منصوبہ بندی تھی۔ اس دوران آئی سی یو اور انتھسزیا ڈیپارٹمنٹ کو اعتماد میں نہیں لیا گیا کیونکہ ان شعبوں کو اسپتال کے اہم شعبہ جات کے طور پر کبھی تصور نہیں کیا جاتا۔ اس بات پر تعجب ہوا کہ کرونا وائرس سے متاثرہ افراد کو ایمرجنسی کی سابق عمارت میں رکھنے کے احکامات جاری کئے گئے ہیں، جہاں مریضوں کو کوئی سہولت میسر نہیں۔

انہوں نے لکھا ہے کہ لیڈی ریڈنگ اسپتال میں کرونا وائرس کے سدباب کے لیے اقدامات نہ ہونے کے برابرہیں۔ اسی طرح  انتہائی نگہداشت سمیت دیگر یونٹس میں حفاظتی انتظامات موجود نہیں ہیں۔ ہسپتال میں کرونا وائرس کی بیخ کنی کے لیے موثر منصوبہ بندی کا فقدان ہے۔

انتہائی نگہداشت یونٹ کو صرف 6 ڈاکٹرز چلا رہے ہیں۔ آئی سی یو میں نرسنگ اسٹاف کی کمی ہے۔ کم اسٹاف کے ساتھ آئی سی یو چلا رہے ہیں۔ اس کے باوجود انتظامیہ تنقید کررہی ہے۔

دوسری جانب اسپتال کے ترجمان محمد عاصم نے کہا ہے کہ ڈاکٹر عائشہ کے ساتھ مذاکرات جاری ہیں، انتظامیہ نے ڈاکٹر عائشہ استعفی قبول نہیں کیا ہے۔

ترجمان نے دعویٰ کیا کہ لیڈی ریڈنگ اسپتال میں قائم کرونا کمپلیکس جدید سہولیات سے آراستہ ہے جس میں وینٹی لیٹر اور دیگر تمام سہولیات موجود ہیں، اسپتال انتظامیہ ڈاکٹرز کو ہر ممکن سہولیات فراہم کررہی ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube