ہوم   > پاکستان

پاکستان نےبھارتی طیاروں کی رہنمائی کی،بھارتی پائلٹس مشکور

SAMAA | - Posted: Apr 5, 2020 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Apr 5, 2020 | Last Updated: 2 months ago

پاکستانی ایوی ایشن نے مشکل حالات میں بھارتی طیاروں کی رہنمائی کرکے بھارتی عوام کے دل جیت لیے۔

بھارتی ذرائع ابلاغ کے مطابق پاکستانی ایوی ایشن نے بھارتی طیارے جو کورونا متاثرین کے لیے امدادی سامان لے کر جرمنی جارہے تھے، انہیں فضائی راستے کیلئے رہنمائی اور معاونت فراہم کی۔

بھارتی طیارے کراچی ریجن کی فضائی حدود سے گزر رہے تھے، ایک بھارتی طیارہ ممبئی سے اور دوسرا نئی دہلی سے فرینکفرٹ جارہا تھا۔ پاکستانی سی اے اے کے ایئر ٹریفک کنٹرولر نے بھارتی طیاروں کو ڈائریکٹ روٹ دیا۔

یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ عام حالات میں کسی طیارے کو براہ راست روٹ فراہم نہیں کیا جاتا۔ بھارتی طیارے بوئنگ 777 اور 787 طیارے کا ایرانی ایئرٹریفک کنٹرولر سے رابطہ نہیں ہو رہا تھا۔

ممبئی سے بوئنگ طیارے نے دوپہر 2 بج کر 30 منٹ پر اڑان بھری اور تقریباً 5 بجے طیارہ پاکستانی حدود میں داخل ہوا۔ جس کے بعد بھارتی پائلٹس نے پاکستانی کنٹرول ٹاور سے رابطہ کیا۔ پاکستانی ایئر کنٹرول ٹاور سے رابطے کے بعد انڈیا کیلئے پاکستانی ایئر کنٹرولر کا جواب کسی “حیرت” سے کم نہ تھا۔

پاکستان کی جانب سے آنے والے پیغام پر بھارتی پائلٹس حیران رہ گئے۔

کراچی کے کنٹرول ٹاور سے بھارتی پائلٹس کو مخاطب کرتے ہوئے کہا گیا کہ “اسلام و علیکم، ہم آپ کو کراچی کنٹرول ٹاور سے خوش آمدید کہتے ہیں“۔

کراچی ایئر کنٹرول ٹاور سے دوبارہ پیغام آیا کہ ” آپ اس بات کی تصدیق کریں کہ آپ ریلیف سامان لے کر جرمنی کے شہر فرینکفرٹ جا رہے ہیں“، جس پر بھارتی طیارے نے ایوی ایشن زبان میں جواب دیا “ایفرم”، یعنی تصدیق۔

کراچی کنٹرول ٹاور کی جانب سے رہنمائی اور تعاون پر بھارتی پائلٹس نے ان کا شکریہ ادا کیا۔

بھارتی حکام نے این ڈی ٹی وی کو بتایا کہ پاکستان کے اس عمل سے بھارتی طیاروں کے قیمتی 15 منٹ بھی ضائع ہونے سے بچ گئے۔

پاکستان کی جانب سے بھارت کیلئے یہ مدد صرف یہاں ہی ختم نہ ہوئی، بلکہ پاکستانی سی اے اے کے ایئر ٹریفک کنٹرولر نے بھارتی طیاروں کو ایک بار پھر مدد فراہم کی اور پاکستانی اے ٹی سی نے ایران کے اے ٹی سی سے لینڈ لائن پر رابطہ کیا۔

پاکستانی سی اے اے کے مطابق پاکستانی ائیر ٹریفک کنٹرولر نے ایرانی اے ٹی سی کو انڈین طیاروں سے رابطہ کرنے کو کہا، جس پر ایرانی اے ٹی سی نے بھارتی طیاروں کو1 ہزار کلو میٹر کا ڈائریکٹ روٹ فراہم کیا۔ دونوں بھارتی پائلٹس نے پاکستانی ایئر ٹریفک کنٹرولر کا تعاون پر شکریہ ادا کیا۔

پاکستانی کاوشوں اور مدد کے بعد بھارت کی وہ فلائٹ جو جرمنی کے شہر فرینکفرٹ میں 9 بج کر 15 منٹ پر لینڈ ہونی تھی وہ پاکستان کی وجہ سے ٹائم سے قبل ہی 8 بج کر 35 منٹ پر لینڈ کرگئی۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube