ہوم   > پاکستان

کرونا وائرس: سندھ میں مکمل لاک ڈاؤن شروع

SAMAA | - Posted: Mar 23, 2020 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Mar 23, 2020 | Last Updated: 2 months ago

وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاہ کے حکم پر کراچی سمیت صوبے بھر میں 15 دن کےلیے مکمل لاک ڈاؤن آج 23 مارچ سے شروع ہوگیا۔ رات 12 بجے سے شروع ہونے والے لاک ڈاؤن کے دوران ایمرجنسی میں نکلنے والے کے پاس شناختی کارڈ ہونا لازمی ہے۔

گزشتہ روز وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی جانب سے جاری ویڈیو پیغام میں کراچی سمیت سندھ بھر میں اتوار کی رات 12 بجے سے لاک ڈاؤن کا اعلان کیا گیا۔ مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ ہم سختی کريں تو مسئلہ حل ہوگا۔

وزیراعلیٰ سندھ کی جانب سے جاری حکم کے مطابق غير ضروری طور پر لوگوں کو باہر نکلنے کی اجازت نہيں ہوگی۔ دفاتر اور اجتماع کی جگہيں بند ہونگی۔ کوئی بیمار ہے تو اسے اسپتال لے جايا جا سکے گا۔ جب تک آپ قریبی روابط سے دور ہیں تو آپ کو یہ مرض نہیں لگے گا۔ قانون نافذ کرنے والے ادارے کو بتایا گیا ہے کہ اگر کوئی ضرورت سے باہر نکلے تو اُس کو اجازت ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم مہنگائی اور ذخيرہ اندوزی روکيں گے۔ ايک گاڑی ميں 2 لوگ ہی سفر کرسکيں گے، جس کا بجلی کا بل 4 ہزار ہے، اس سے اس ماہ نہيں ليں گے۔ سوئی گيس 2 ہزار روپے کا بل نہيں لے گی۔ اگر کوئی بل ادا نہ کرسکے تو اس کا گھر کا کنکشن نہيں کٹے گا۔

وزیراعلی کے اعلان کے مطابق صوبے میں کراچی سے لے کر تھر پارکر تک لاک ڈاؤن رہے گا۔ اگر کسی کو کرونا کی علامات ہيں اور ٹريول ہسٹری نہيں تو گھر ميں رہيں۔

غریبوں کے گھر راشن کا انتظام

شہریوں کی سہولت سے متعلق وزیراعلی کا کہنا تھا کہ میں نے “کے الیکٹرک، سیپکو، حیسکو، واٹر بورڈ اور ایس ایس جی سی کو ہدایت دی ہے کہ کسی بھی علاقے میں لوڈ شیڈنگ نہ کریں۔ یہ مہینہ سب کے لیے مشکل ہوگا، خاص طورپر روزانہ اجرت والوں کو، ہم سب کو غربیوں کا خیال رکھنا ہے۔

حکومت سب سیاسی جماعتوں اور مخیر حضرات سے مل کر ہم غریبوں کے گھر تک راشن پہنچائیں گے یا نقد کی صورت میں دیں گے۔ اگر ہم 15 دن میں کامیاب ہوئے تو ہم اپنے عوام کو اس بیماری سے بچا پائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ افواہیں بہت پھیلیں گی، ہمارا ایک فیس بُک اور ایک ٹویٹر اکائونٹ ہوگا اُس پر تمام گائیڈ لائنز (رہنمائی ) جاری کی جائے گی، ہم اپنی نوٹی فیکیشن روزانہ کی بنیاد پر جاری کرتے رہیں گے، میں پاک آرمی، اپنی میڈیکل ٹیمز، پولیس ایڈمنسٹریشن کا شکر گزار ہوں کہ وہ ہماری مدد کر رہے ہیں، میں اُن مالکان کو درخواست کرتا ہوں کہ آپ اپنے ملازمین کو اُجرت ضرور ادا کریں، مخیر حضرات غریبوں کی مدد کے لیے آگے آئیں، میں تمام سیاسی، سماجی اور مذہبی لوگوں کا شکر گزارہوں کہ وہ تعاون کررہے ہیں۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube