ہوم   > پاکستان

منگل کو معاشی پیکج کا اعلان کروں گا، وزیراعظم

SAMAA | - Posted: Mar 20, 2020 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Mar 20, 2020 | Last Updated: 2 months ago

Photo/ONLINE

وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ معاشی پیکج تیار کر رہے ہیں جس کا اعلان منگل 24 مارچ کو کریں گے۔

وزیراعظم ہاؤس میں سنیئر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ کرونا وائرس کے باعث تمام ممالک کی معیشت متاثر ہوئی ہے۔ امریکا نے ایک ٹریلین ڈالر کا معاشی پیکج تیار کیا ہے۔ ہم ترقی یافتہ ممالک کی طرح بڑےبڑے بجٹ مختص نہیں کرسکتے مگر موجودہ صورتحال سے نمٹنے کے لئے اکنامک پیکج دینے کا فیصلہ کیا ہے اور اس کا اعلان منگل کو کیا جائے گا۔

وزیراعظم نے کہا کہ اس وقت کرونا وائرس سے متعلق پاکستان میں دو حکمت عملیاں چل رہی ہیں۔ ایک سندھ حکومت کی ہے جس میں لاک ڈاؤن شامل ہے۔ دوسری حکمت عملی وفاق اور دیگر صوبوں کی ہے جس میں یومیہ اجرت والے شہریوں کا خیال رکھا جارہا ہے۔ اس لیے لاک ڈاؤن کا فیصلہ نہیں کیا مگر عوام خود ذمہ داری کا مظاہرہ کرتے ہوئے سماجی دوری اختیار کرلیں۔

عمران خان نے کہا کہ اس وقت ہمیں دو بڑے خدشات ہیں۔ پہلا یہ کہ اگر اٹلی کی طرح پاکستان میں بھی کرونا کے متاثرین کی تعداد یکدم بڑھ جائے تو پھر متاثرہ افراد میں 4 سے 5 فیصد کو انتہائی نگہداشت کی ضرورت پڑتی ہے۔ جس میں وینٹی لیٹرز اور ڈاکٹرز سمیت دیگر طبی سہولیات کی قلت پڑ جائے گی۔ اس وقت اٹلی میں اسی صورتحال کا سامنا ہے۔ اس کا واحد حل اور علاج یہ ہے کہ لوگ سماجی دوری اختیار کریں اور خود کو گھروں تک محدود کرلیں۔

وزیراعظم نے کہا کہ دوسرا خوف افراتفری کا ہے۔ اگر معاشرے میں افراتفری اور خوف پھیل جائے تو سپرمارکیٹ اور خریداری مراکز پر رش بڑھ جائے گا۔ لوگ ذخیرہ کرنا شروع کریں گے اور مارکیٹ میں اشیا کی قلت پیدا ہوجائے گی پھر حکومت اس کا کچھ نہیں کرسکتی۔ ترقی یافتہ ممالک میں بھی یہی ہوا، وہاں مارکیٹیں خالی ہوگئی ہیں۔

امریکا کی مثال دیتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ وہاں لوگ قطار میں کھڑے اسلحہ خرید رہے ہیں کہ بیروزگاری اور اشیا کی قلت کے دوران جرائم بڑھ جائیں گے۔ وہ اپنی جان اور مال کی حفاظت کیلئے فکر مند ہیں۔ اس لیے میڈیا سے اپیل کرتا ہوں کہ سنسنی نہ پھیلائیں، ذمہ داری کا مظاہرہ کریں۔

وزیراعظم کے مشیر برائے صحت ظفر مرزا نے اس موقع پر کہا کہ تمام صوبے اپنی حیثیت میں اس وبا سے نمٹنے کیلئے اقدامات کر رہے ہیں مگر کچھ چیزوں کو قومی سطح پر منیج کرنے کی ضرورت ہے۔ خاص طور پر معلومات کو سینٹرلائز کرنا ضروری ہے۔ متاثرین اور اموات کی اعداد ایک ہی جگہ سے جاری ہونے چاہئیں۔ اس لیے آج یہ فیصلہ ہوا ہے کہ وفاقی وزارت صحت روزانہ اس بارے میں اعداد و شمار جاری کرے گی اور صوبے بروقت وزارت صحت کو اعداد و شمار فراہم کریں گے۔

وزیراعظم کی مکمل گفتگو سننے کیلئے یہ ویڈیو دیکھیں

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube