ہوم   > پاکستان

مہنگی ترین 27 سرکاری پراپرٹیز نیلام کرنے کی تیاری

SAMAA | - Posted: Mar 11, 2020 | Last Updated: 3 months ago
SAMAA |
Posted: Mar 11, 2020 | Last Updated: 3 months ago

Photo / AFP)

نجکاری کمیشن نے سرکاری اداروں کی پراپرٹیز کی نیلامی کا شیڈول جاری کر دیا۔ مختلف محکموں کی 27 پراپرٹیز کی نیلامی کیلئے بولی کا عمل 27 مارچ سے شروع ہوگا۔ وزارت  صنعت و پیداوار کی لاہور میں 41 کنال پراپرٹی کی ریزرو پرائس 5 ارب روپے سے زیادہ مقرر کر دی گئی۔

حکومت نے نان ٹیکس ریونیو بڑھانے کیلئے کوششیں تیز کردیں۔ نجکاری کمیشن نے ایف بی آر، وزارت صنعت و پیداوار، آبی وسائل، ٹیکسٹائل ڈویژن اور ایرا سمیت مختلف محکموں کی جائیدادوں کی نیلامی کا شیڈول جاری کر دیا۔ سرمایہ کاروں سے بولی میں حصہ لینے کیلئے درخواستیں طلب کر لی گئیں۔

نجکاری کمیشن کے مطابق بولی کا عمل 27 مارچ سے شروع کرکے 17 اپریل تک مکمل کر لیا جائے گا۔ 27 پراپرٹیز کی مجموعی ریزرو پرائس تقریبا پونے سات ارب روپے مقررکی گئی ہے۔

صرف وزارت صنعت و پیداوار کی مال روڈ اور لارنس روڈ لاہور پر واقع ریپبلک موٹرز کی زمین اور بلڈنگ کی ریزرو پرائس 5 ارب 2 کروڑ روپے سے زیادہ مقرر کی گئی ہے۔ یہ سرکاری رقبہ اور عمارت 41 کنال 12 مرلے پر محیط ہے۔

ایف بی آر کی فیصل آباد میں 15 کنال اراضی کی ریزرو پرائس 64 کروڑ مقرر کی گئی ہے۔ اسی طرح وزارت آبی وسائل کی لاہور میں 16 مرلہ پراپرٹی کی قیمت 9 کروڑ روپے مقرر کی گئی ہے۔

دیگر سرکاری پراپرٹیز کی مالیت بھی کروڑوں روپے ہے۔ نجکاری پروگرام میں پیش رفت کا جائزہ لینے کیلئے وزیر نجکاری محمد میاں سومرو کی زیر صدارت اجلاس ہوا۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ دو پاور پلانٹس، سروسز ہوٹل لاہور اور ایس ایم ای بینک سمیت 6 سے زیادہ اداروں کی نجکاری میں پیش رفت ہو رہی ہے تاہم او جی ڈی سی ایل کی نجکاری کا عمل فی الحال روک دیا گیا ہے۔

وزیر نجکاری نے ٹرانزکشنز کی راہ میں حائل قانونی اور تکنیکی رکاوٹیں دور کرنے کی ہدایت کردی۔ محمد میاں سومرو نے کہا کہ نجکاری کا عمل شفاف طریقے سے بروقت مکمل کرنا ترجیح ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube