ہوم   > پاکستان

لاہور: وکیل کے قتل میں مطلوب پولیس افسر گرفتار

SAMAA | - Posted: Mar 10, 2020 | Last Updated: 3 months ago
SAMAA |
Posted: Mar 10, 2020 | Last Updated: 3 months ago

لاہور میں ایڈوکیٹ شہباز تتلہ کے اغواء اور مبینہ قتل کی واردات میں مطلوب ایس ایس پی مفخرعدیل کو حراست میں لے لیا گیا۔

پولیس ذرائع کے مطابق آئندہ دو روز میں مفخر عدیل کی گرفتاری ظاہر کرکے تفتیش آگے بڑھائی جائے گی۔ ملزم کے دو ساتھی اس سے قبل حراست میں لئے جاچکے ہیں۔

ایک ملزم اسد بھٹی نے پولیس کو بیان دیا تھا کہ ایس ایس پی مفخر نے اپنے دوست شہباز کو قتل کرکے لاش تیزاب کے ڈرم میں پھینکی۔

زیر حراست ملزمان کی نشاندہی پر تفتیشی ٹیموں نے ایس ایس پی کے زیر استعمال گھر کا سیوریج سسٹم کھود کر چند روز قبل قتل کے شواہد اکٹھے کئے تھے۔

ایس ایس پی مفخر عدیل اور سابق اسسٹنٹ اٹارنی جنرل شہباز تتلہ کے لاپتا ہونے کا معاملہ گزشتہ ماہ سامنے آیا تھا۔

بغیر درخواست کے ڈیوٹی سے مسلسل غیر حاضری کے بعد پنجاب کانسٹیبلری نے مفخر عدیل کو ڈیوٹی پر نہ آنے کی وجہ سے او ایس ڈی بنانے کے لیے مراسلہ بھیجا تھا۔

کمانڈنٹ پنجاب کانسٹیبلری نے اپنے مراسلے میں کہا تھا کہ ایس ایس پی مفخر عدیل ڈیوٹی پر نہیں آئے۔ انہوں نے کال کی ہے اور نہ چھٹی کی درخواست بھیجی ہے۔

ایس ایس پی مفخر عدیل پر اپنے دوست سابق اسسٹنٹ اٹارنی جنرل شہباز تتلہ کو قتل کرنے کا الزام ہے۔ شہباز تتلہ کے اغوا کا مقدمہ 7 فروری کو تھانہ نصیر آباد لاہور میں درج کیا گیا تھا۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube