Thursday, October 29, 2020  | 11 Rabiulawal, 1442
ہوم   > پاکستان

ماسک کی قلت کا خدشہ،لاہورہائی کورٹ میں درخواست دائر

SAMAA | - Posted: Feb 28, 2020 | Last Updated: 8 months ago
SAMAA |
Posted: Feb 28, 2020 | Last Updated: 8 months ago

فوٹو: فائل

کرونا وائرس کے پھيلاؤ کے خدشے کے پيشِ نظرماسک کا بحران پيدا ہونے کا امکان ہے۔ لاہور ہائی کورٹ نے وفاقی حکومت سمیت پنجاب حکومت اور ڈرگ ريگوليٹری اتھارٹی سے بھی جواب طلب کرليا ہے۔

جمعہ کو لاہور ہائی کورٹ ميں دائر درخواست ميں موقف اختيار کيا گيا کہ کرونا وائرس کے خدشے پر ذخیرہ اندوزوں نے مارکیٹ سے ماسک غائب کر دیا ہے اور80 روپے ميں بکنے والے ماسک کی قيمت 1000 روپے تک جا پہنچی ہے۔

چيف جسٹس مامون رشيد نے کہا کہ اسپتالوں میں بھی ماسک غائب ہوگئے ہيں جس پر سرکاری وکيل نے بتايا کہ حکومت ماسک کی دستيابی ممکن بنانے کی کوشش کررہی ہے،چھاپہ مار ٹیمیں بھی بنا دی گئی ہیں۔

عدالت نےوفاقی، صوبائی حکومتوں اورڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی سے پير کو جواب طلب کر ليا ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز سندھ ہائیکورٹ میں کراچی شہرمیں ماسک کی قلت اورمہنگا فروخت کرنے کیخلاف درخواست دائرکی گئی ۔ درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ حکومت نے کرونا وائرس کے خدشےکےپیش نظرپیشگی اقدامات نہیں کیے، ذخیرہ اندوزوں نےماسک مہنگا فروخت کرنا شروع کردیا، فیس ماسک ملک سے نایاب اور جو بچے ہیں مہنگے داموں فروخت ہورہے ہیں۔ درخواست میں کہا گیا ہے کہ حکومت نے اسپتالوں میں کوئی ایمرجنسی پلان نہیں بنایا، حکومت نے کوئی ایس او پیز بھی نہیں بنائی۔

درخواست گزار نے مطالبہ کیا ہے کہ ماسک مہنگا بیچنے اور ذخیرہ اندوزی کرنےوالوں کیخلاف کارروائی کی جائے اور فریقین کو ماسک کی سستےداموں میں فروخت یقینی بنانےکاپابند کیاجائے۔

درخواست گزار نے وفاقی حکومت، وفاقی وزارت صحت، حکومت سندھ، تمام صوبوں کے چیف سیکرٹریز کو فریق بنایا ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube