ہوم   > پاکستان

پاکستان میں کورونا وائرس کے 2 مصدقہ کیسز رپورٹ

SAMAA | - Posted: Feb 26, 2020 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Feb 26, 2020 | Last Updated: 1 month ago

فوٹو : اے ایف پی

پاکستان میں کورونا وائرس کے 2 مصدقہ کیسز رپورٹ ہوئے ہیں، وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر نے اپنے ٹویٹر پیغام میں تصدیق کردی۔ ان کا کہنا ہے کہ دونوں مریضوں کی حالت مستحکم ہے، گھبرانے کی ضرورت نہیں۔

وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے صحت نے ٹویٹر پیغام میں تصدیق کی ہے کہ پاکستان میں کورونا وائرس کے پہلے دو کیسز رپورٹ ہوئے ہیں، دونوں متاثرہ مریض مستحکم ہیں، گھبرانے کی کوئی ضرورت نہیں ہے، متاثرین کو معیاری طبی قواعد کے مطابق انتہائی نگہداشت میں رکھا گیا ہے۔

کوئٹہ میں وزیراعلیٰ جام کمال خان کے ساتھ پریس کانفرنس کرتے ہوئے وزیراعظم کے معاون خصوصی صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے بتایا کہ پاکستان میں 2 افراد میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے، مکمل تصدیق تک کسی شخص کے وائرس سے متاثر ہونے کا نہیں کہہ سکتے، ایک مریض کا تعلق سندھ اور دوسرے کا فیڈرل ایریاز سے ہے، دونوں مریضوں نے ایران کا سفر کیا تھا۔

انہوں نے کہا کہ بخار اور دیگر علامات کی صورت میں طبی معالج یا ہماری ہیلپ لائن پر رابطہ کریں، کورونا وائرس سے متعلق روزانہ اپ ڈیٹ دی جائے گی، احتیاطی تدابیر کا اختیار کرنا ضروری ہے، حکومت نے وائرس کے خدشے سے نمٹنے کیلئے مؤثر اقدامات کئے ہیں، پوری کوشش ہے کہ کورونا وائرس پاکستان میں وباء کی شکل اختیار نہ کرے۔

معاون خصوصی برائے صحت کا مزید کہنا ہے کہ حکومت کی جانب سے کل سے روزانہ کی بنیاد پر عوام کو اپ ڈیٹس دی جائیں گی، 100 سے زیادہ مشتبہ مریضوں کے ٹیسٹ کئے سب منفی آئے۔

مزید جانیے : ہمیں ایران سے بلاکر قرنطینہ میں رکھا جائے، پاکستانی شہری 

دوسری جانب سے اس سے قبل محکمہ صحت سندھ نے ایران سے حالیہ دنوں میں ہوائی جہاز کے ذریعے کراچی آنیوالے 22 سالہ نوجوان یحییٰ جعفری کے کورونا وائرس سے متاثر ہونے کی تصدیق کی تھی۔

سندھ حکومت نے متاثرہ نوجوان اور اس کے اہل خانہ کو قرنطینہ میں منتقل کردیا ہے جبکہ یحییٰ کے ساتھ ایران سے آنیوالے تمام مسافروں کا مکمل طبی معائنہ اور ٹیسٹ کئے جائیں گے۔

محکمہ صحت کے مطابق متاثرہ نوجوان 20 فروری کی صبح کراچی پہنچا تھا، ایران میں بھی اسے بخار، سر اور جسم میں درد کی شکایت تھی جبکہ اسے 25 فروری کو اسپتال لایا گیا۔

ایران میں کورونا وائرس سے تقریباً 150 افراد متاثر ہوچکے ہیں جس میں نائب وزیر صحت بھی شامل ہیں، جبکہ مہلک مرض سے ہلاک ہونیوالوں کی تعداد 19 تک پہنچ چکی ہے۔

یہ بھی پڑھیں : کرونا وائرس سےبچاؤ کیلئے کون سا ماسک کارگر ہوگا 

ایران میں کورونا وائرس پھیلنے کی اطلاع ملنے کے بعد پاکستان نے ایران کے ساتھ تمام 5 سرحدی کراسنگ پوائنٹس بند کردیئے تھے، جہاں سے آمد و رفت کئی روز سے بند ہے۔

ایران سے واپس آنیوالے زائرین سمیت 270 افراد کو دو ہفتوں کیلئے تفتان کے پاکستان ہاؤس میں سرحد پر قرنطینے میں رکھا گیا ہے۔

پراونشل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی بلوچستان کے حکام کا کہنا ہے کہ انہوں نے تفتان سرحد پر ہر قسم کے حفاظتی انتظامات کر رکھے ہیں۔

مزید جانیے : بلوچستان میں کرونا وائرس کاپھیلاؤ روکنےکےلیےاقدامات

واضح رہے کہ چین میں کورونا وائرس سے ہلاک ہونیوالوں کی تعداد 2750 سے تجاوز کرچکی ہے جبکہ ایران سمیت دنیا بھر میں مرنے والوں کی تعداد بھی تقریباً 100 تک پہنچ چکی ہے، انتہائی مہلک بیماری سے اب تک ایک لاکھ کے قریب افراد متاثر ہوچکے ہیں۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
CORONAVIRUS, PAKISTAN, IRAN, COVID-19, KARACHI, HEALTH, CHINA, WUHAN,
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube