ہوم   > پاکستان

لاہور:شیرکےپنجرےسےنوجوان کی باقیات برآمد

SAMAA | - Posted: Feb 26, 2020 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Feb 26, 2020 | Last Updated: 1 month ago

پولیس نےواقعےکی تحقیقات شروع کردیں

لاہور کے سفاری پارک ميں شيروں کے پنجرےسےايک شخص کی لاش کی باقيات ملی ہیں۔بلال کے والد نے قانونی کارروائی نہ کرنے کی درخواست دے دی اور پارک انتظاميہ کو بری الذمہ قرارديا۔

لاہور سفاری پارک کی انتظاميہ نے بتایا ہے کہ نوجوان شیر کے پنجرے کا جنگلا پھلانگ کر گھاس کاٹنے گيا تھا کہ شيروں نے اس پر اچانک حملہ کرديا۔ شيروں کے حملے ميں نوجوان مارا گيا۔

پولیس نے بتایا ہے کہ شبہ ہے کہ یہ باقيات 18 سالہ بلال کی ہيں جو 2 روز سے لاپتہ تھا۔ پولیس نے واقعے کی تحقیقات شروع کردی ہیں کہ نوجوان کو قتل تو نہیں کيا گيا يا پھر یہ کوئی ناگہانی حادثہ تھا۔

 پوليس نے مختلف پہلوؤں پرتفتيش شروع کردی ہے۔10 سال پہلے سفاری پارک ميں 18 سالہ بلال کے ماموں کو بھی قتل کيا گيا تھا۔

پوليس کا کہنا ہے کہ شیر کے پنجرے کی اونچائی 15 فٹ ہے، اس کو عبور کرنا کسی صورت آسان نہیں تھا۔ پارک انتظامیہ نے مزید بتایا ہے کہ بلال پارک کاملازم نہيں تھا،گھاس کاٹنےخود آيا تھا،جائے وقوع کے قريب سی سی ٹی وی کيمرے موجود نہيں تھے۔

لاہورسفاری پارک کےڈپٹی ڈائريکٹر شفقت علی کا کہنا ہے کہ شيروں کے حملے ميں جاں بحق لڑکا منگل کی شام سےلاپتہ تھا،گھر والے آئے تو نشاندہی پر ہڈياں مليں۔

شفقت علی نے مزید بتایا کہ پارک میں شير کھلے ہوتے ہيں، لوگوں کو سير کيليے کوسٹرميں لاتےہيں، سفاری پارک کے گيٹ صرف وزيٹرزکيلئے کھلتے ہيں، پوليس اور کرائم سين ٹيم نے شواہد جمع کرليے ہیں۔

لاہور کے سفاری پارک ميں مرنے والے نوجوان کے ورثا نے ہنگامہ آرائی اور توڑ پھوڑکی۔ مشتعل افرا نے پارک کے دفتر میں گھس کرشيشے توڑ ديے،پولیس نے لواحقين کو باہر بھيج ديا۔

وزیراعلیٰ پنجاب نے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے تحقیقات کا حکم دے دیا ہے۔کمشنر اور سیکرٹری وائلڈ لائف سے 24گھنٹے میں رپورٹ طلب کرلی گئی ہے۔ وزیراعلی نے متاثرہ خاندان سے اظہارِ افسوس کیا ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube