ہوم   > پاکستان

صحافیوں اوروکلاء کا سوشل میڈیاقوانین کیخلاف ملک گیرتحریک چلانے کااعلان

SAMAA | - Posted: Feb 22, 2020 | Last Updated: 3 months ago
SAMAA |
Posted: Feb 22, 2020 | Last Updated: 3 months ago

صحافیوں، وکلاء اور انسانی حقوق تنظیموں نے پی ٹی آئی حکومت کی جانب سے سوشل میڈیا سے متعلق نئے قوانین کو یکسر مسترد کرتے ہوئے اس کیخلاف ملک گیر تحریک چلانے کا اعلان کردیا۔ رہنماؤں کا کہنا ہے کہ جمہوری دور میں آمرانہ قوانین لاگو کئے جارہے ہیں۔

پاکستان یونین آف جرنلسٹس، بلوچستان یونین آف جرنلسٹس، بلوچستان ہائیکورٹ بار ایسوسی ایشن، بلوچستان بار کونسل، انسانی حقوق کمیشن آف پاکستان (بلوچستان چیپٹر) نے نئے قوانین کیخلاف احتجاج کا اعلان کیا ہے۔

پی ایف یو جے کے صدر شہزادہ ذوالفقار اور بلوچستان یونین آف جرنلسٹس کے  صدر ایوب ترین نے کوئٹہ پریس کلب میں سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کے سابق صدر ایڈووکیٹ علی احمد کرد، بلوچستان ہائیکورٹ بار ایسوسی ایشن کے صدر ایڈووکیٹ باسط شاہ، بلوچستان بار کونسل کے نائب صدر سلیم لاشاری اور انسانی حقوق کمیشن آف پاکستان بلوچستان چیپٹر کے صدر حبیب طاہر ایڈووکیٹ کے ہمراہ مشترکہ پریس کانفرنس میں ملک گیر احتجاجی تحریک چلانے کا اعلان کیا۔

صحافتی اور وکلاء تنظیموں کے رہنماء کوئٹہ پریس کلب میں پریس کانفرنس کررہے ہیں۔ فوٹو سماء

اس موقع پر صحافی رہنماؤں کا کہنا تھا کہ اظہار رائے کی آزادی سلب کرنے کیخلاف ملک گیر تحریک چلائی جائے گی، سوشل میڈیا سے متعلق رولز کی ایوان کے ذریعے قانون سازی نہیں کی گئی۔

انہوں نے الزام لگایا کہ جمہوری دور میں آمرانہ قوانین لاگو کئے جارہے ہیں، حکومت فوری طور پر تحریری حکم کے ذریعے سوشل میڈیا سے متعلق نئے رولز کے نفاذ کا فیصلہ واپس لے۔

رہنماؤں نے مزید کہا نئے سوشل میڈٰیا قوانین سے ڈیجٹلائز معیشت کو خطرات لاحق ہیں، قوانین سے تاثر ملتا ہے کہ انہیں بنانے کے پیچھے خاص منصوبہ بندی ہے۔

بی یو جے کے صدر ایوب ترین کا کہنا تھا کہ اس حوالے سے 24 فروری (پیر) کو بلوچستان اسمبلی کے باہر ایک روزہ احتجاجی کیمپ لگایا جائے گا، جس میں صحافیوں کے  ساتھ وکلاء اور سول سوسائٹی تنظیمیں بھی شرکت کریں گی۔

سپریم کورٹ بار کے سابق صدر علی احمد کرد ایڈووکیٹ، وکلاء تنظیموں اور انسانی حقوق کمیشن آف پاکستان کے رہنماؤں کا کہنا تھا کہ پاکستان کے عوام کو اظہار رائے کی آزادی کسی نے پلیٹ میں رکھ کر نہیں دی، اس کیلئے بڑی قربانیاں دی گئی۔

ان کا کہنا تھا کہ وکلاء تنظیمیں سوشل میڈیا کے نئے قوانین کیخلاف ملک گیر تحریک میں ہر محاذ پر صحافیوں کے ساتھ کھڑی ہوں گی۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
QUETTA, PAKISTAN, SOCIAL MEDIA, YOUTUBE, FACEBOOK, WHATSAPP, TWITTER, NEW LAWS, JOURNALIST, LAWYERS, NATIONWIDE PROTEST, BALOCHISTAN,
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube