ہوم   > پاکستان

کراچی تجاوزات کيس:10سال میں گراؤنڈپلس2سےزائدتعمیرات کی رپورٹ طلب

SAMAA | - Posted: Feb 19, 2020 | Last Updated: 3 months ago
SAMAA |
Posted: Feb 19, 2020 | Last Updated: 3 months ago

سپريم کورٹ نے کراچی تجاوزات کيس ميں دس سال کے دوران شہر میں گراؤنڈ پلس ٹو سے زائد تعمیرات کی رپورٹ طلب کرلی۔ سپريم کورٹ نے بلڈنگز کے مالکان کے نام اور ایڈریس کے ساتھ تفصیلات پيش کرنے کی ہدايت کی ہے۔

بدھ کو کراچی تجاوزات اور سرکلرریلوے بحالی کيس ميں سپریم کورٹ نے 40 صفحات پر مشتمل تحریری حکم نامہ جاری کردیا ہے۔ کراچی میں گراؤنڈ پلس ٹو سے زائد تعمیرات کا مکمل ریکارڈ طلب کرلیا گیا ہے۔

سپریم کورٹ نے حکم دیا ہے کہ 10سال کی تعمیرات کی منظوری کا مکمل ریکارڈ پیش کریں، بلڈنگز کے مالکان کے نام اور ایڈریس کے ساتھ تفصیلات پيش کی جائيں، چیف سیکريٹری کو 2 ہفتے میں جامع رپورٹ پيش کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔

عدالت نے مزید حکم دیا کہ گرین لائن منصوبے کی مارچ2021تک تکمیل یقینی بنائی جائے۔ عدالت نے کڈنی ہل اور ہل پارک کی زمین سےتجاوزات فوری ختم کرانےکاحکم بھی دیا۔

سپریم کورٹ کی جانب سے ریمارکس دئیے گئے ہیں کہ کراچی میں غیرقانونی عمارتوں کی بھرمار ہے، ایس بی سی اے غیرقانونی تعمیرات اور شہر کی تباہی کی ذمہ دار ہے، ہزاروں غیرقانونی عمارتیں بن گئيں،ایس بی سی اے افسران رشوت ليتےرہے۔

عدالت نے کہا کہ پولیس اور ديگر اداروں نے بھی غیرقانونی تعمیرات کو تحفظ فراہم کیا، ڈی جی اپنی مرضی سے غیرقانونی تعمیرات نہيں روک سکتا، ڈی جی ایس بی سی اے بظاہر صرف اپنے ملازمین کیلئے ربڑاسٹمپ ہیں۔

سپریم کورٹ نے ہدایت دی کہ وزیراعلٰیٰ سندھ خود معاملات دیکھیں، ایس بی سی ای کے کرپٹ افسران کو فوری برطرف کريں۔

عدالت نے کراچی میں الہٰ دین پارک سے متصل رہائشی اسکیم کی زمین قبضےمیں لینےکاحکم دیا اور  2ایکڑاراضی کی بلڈر کو الاٹمنٹ کینسل اور تعمیرات منہدم کرنےکی ہدایت بھی کی۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube