ہوم   > پاکستان

اسلاموفوبیا کےباعث مہاجرین کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑا، وزیراعظم

SAMAA | - Posted: Feb 17, 2020 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Feb 17, 2020 | Last Updated: 1 month ago

فوٹو: فائل

وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ نائن الیون کے بعد ہمیں اسلامو فوبیا کا سامنا کرنا پڑا جس کے باعث مسلمان مہاجرين کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔

اسلام آباد میں عالمی مہاجرین کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ گزشتہ 20 سال پاکستانی عوام کےلیے مشکل رہے اور مشکل حالات کے باوجود افغان مہاجرين کی ميزبانی جاری رکھی۔

عمران خان نے کہا کہ افغانستان کا تنازع پاکستان کے مفاد ميں نہيں۔ افغان مہاجرین کے بچوں نے پاکستان ميں کرکٹ سيکھی اور آج افغانستان کی کرکٹ ٹيم عالمی درجہ بندی ميں شامل ہوچکی ہے۔

مسئلہ کشمیر پر بات کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ دنيا بھارتی قيادت کے جارحانہ بيانات کا نوٹس لے ورنہ مقبوضہ کشمير کے معاملے پر اقوام متحدہ نے کردار ادا نہ کيا تو خطہ فليش پوائنٹ بن جائے گا۔ عالمی برادری نے بھارتی قيادت کے جارحانہ بيانات کا نوٹس نہ ليا تو بڑے پيمانے پر خونريزی ہو سکتی ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ مقبوضہ کشمير کے لوگ 6 ماہ سے قيد ميں ہيں۔ بھارت ميں انتہا پسند سوچ کا غلبہ ہے جبکہ بھارت کا شہريت کا قانون بھی مسلمانوں کےخلاف ہے۔ مودی حکومت کے 2 نئے قوانين سے 20 کروڑ مسلمان متاثر ہوئے اور بی جے پی کے رہنما مظاہرين کو پاکستان جانے کا کہہ رہے ہيں۔

عمران خان نے کہا کہ آج کا بھارت وہ نہیں جسے میں جانتا تھا کیونکہ بھارت میں کرکٹ کھیلی ہے وہاں کے حالات جانتا ہوں۔

وزیراعظم کا یہ بھی کہنا تھا کہ جب سے حکومت میں آئے ہم نے امن کےلیے کوششیں کیں۔ پاکستان میں حکومت اور تمام ادارے ایک صفحے پر ہیں۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
PM Imran Khan, Kashmir issue, UN, Afghan conflict, refugees, India
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube