ہوم   > پاکستان

کراچی:12سال پہلےانتقال کرجانےوالی خاتون کی تدفین کردی گئی

SAMAA | - Posted: Feb 15, 2020 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Feb 15, 2020 | Last Updated: 2 months ago

فلیٹ سے تعفن اٹھنے پر پڑوسی سوال کرتے

کراچی ميں 2008 ميں انتقال کرنے والی ذکيہ بی بی کی 12 سال بعد تدفین کردی گئی۔ 

کراچی کی اسکول ٹيچر ذکيہ  گلستان جوہر کريسينٹ اپارٹمنٹ کی رہائشی تھیں۔ ان کا ايک بيٹا قيصر چارٹرڈ اکاؤنٹنٹ تھا اور ايک بيٹی شگفتہ تھی جنہوں نے ذکيہ کے 2008 ميں انتقال کرنے کے بعد لاش دفنانے سے انکار کردیا تھا۔

فلیٹ سے تعفن اٹھنے پر پڑوسی سوال کرتے تو دونوں بھائی بہن جھگڑا کرتے تھے جس کے بعد انھوں نے سوال کرنا ہی چھوڑ دیا تھا۔ تين سے چارسال لاش کے ساتھ گھر ميں گزارنے کے بعد دونوں بہن بھائی گلشن اقبال بلاک 4 کے گھر ميں منتقل ہوگئے تھے مگر ہر ماہ باقاعدگی سے بجلی گيس وغيرہ کے بل لينے اور اپنی ماں کی لاش کو ديکھنے ضرور گلشن اقبال آيا کرتے تھے۔ 4اکتوبر2019کو ہارٹ اٹيک سے قيصر کی موت ہوگئی جس کے غم ميں بہن شگفتہ نے کھانا کھانا چھوڑديا اور 29جنوری 2020 کو ان کا بھی انتقال ہوگیا۔

ان کی وفات کے بعد ان کے ماموں محبوب نے پرانے فليٹ کو آکرکھولا تو اپنی بہن کی لاش دیکھ کر پریشان ہوگئے اور لاش کی باقیات ٹھکانے لگانے کا فیصلہ کیا۔ اس دوران پوليس کو ذکيہ کی لاش کی باقيات کراچی کی کچرا کنڈی سے مليں تو فوٹيج کی مدد سے کھوج لگا کر محبوب تک پہنچی اور اسے گرفتار کرکے مقدمہ درج کرليا۔ مقدمے کی دفعات میں جرم چھپانے،لاش کی بےحرمتی اور قتل کی دفعات شامل کی گئی ہيں۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube