ہوم   > پاکستان

راول پنڈی:سوشل میڈیاگینگسٹرزکی بڑھتی ہوئی تعدادلمحہ فکریہ

SAMAA | - Posted: Feb 7, 2020 | Last Updated: 4 months ago
SAMAA |
Posted: Feb 7, 2020 | Last Updated: 4 months ago

ہرماہ 30 سوشل ميڈيا گينگسٹرز پکڑے جا رہے ہيں

راولپنڈی آن لائن بد معاشوں کا گڑھ بن گيا ہے۔ ہرماہ 30 سوشل ميڈيا گينگسٹرز پکڑے جا رہے ہيں ليکن ان کی تعداد ميں کمی نہيں ہورہی ہے۔پولیس کے مطابق 18 بڑے سوشل ميڈيا گينگ راولپنڈی ميں سرگرم ہيں۔پوليس کنٹرول روم ميں آن لائن ٹيرر گروپس کی مانیٹرنگ بھی شروع کردی گئی ہے۔

راولپنڈی میں ميں ٹرپل تھری،ٹرپل ٹو، ٹائيگر گينگ سميت 18 گينگ کام کررہے ہيں اور ہرگروپ 35 سے 40 لڑکوں پر مشتمل ہے۔ سب سے بڑا گروپ ٹرپل تھری ہے جس ميں 250 لڑکے شامل ہيں۔ ايسے سوشل ميڈيا گروپس رقم لے کر لوگوں کو ڈرانے دھمکانے اور ڈکيتی کی وارداتوں ميں بھی ملوث ہيں۔

راولپنڈی کے 3 علاقے مورگاہ، صادق آباد اورائيرپورٹ کے قريبی علاقے سوشل ميڈيا گينگسٹرز کے چھپنے کی سب سے محفوظ پناہ گاہيں سمجھی جاتی ہيں۔ يہاں سے ہر ماہ 30 افراد گرفتار کيے جاتےہیں ليکن نيٹ ورک ختم نہیں ہوتا۔ پوليس لائن ميں موجود کنٹرول روم  مسلسل ان گينگسٹرز کے تعاقب ميں لگارہتا ہے۔ ہوائی فائرنگ کرنے کی ويڈيو نئی ہو يا پرانی، فوری گرفتاری عمل ميں لائی جاتی ہے۔

پوليس نے دسمبر ميں ٹرپل تھری گینگ کے مبینہ سربراہ  تاجی کھوکھرسميت 25 سوشل ميڈيا گينگسٹرز کو گرفتار کيا ليکن سب کے سب ضمانتوں پر رہا ہوگئے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube