Wednesday, October 27, 2021  | 20 Rabiulawal, 1443

جہلم میں مدرسے کی طالبہ کا ریپ

SAMAA | - Posted: Feb 3, 2020 | Last Updated: 2 years ago
SAMAA |
Posted: Feb 3, 2020 | Last Updated: 2 years ago

پنجاب کے ضلع جہلم میں مدرسے کی طالبہ کے ساتھ زیادتی کا واقعہ سامنے آیا ہے۔ پولیس نے متاثرہ لڑکی کے بیان پر ایک ملزم وین ڈرائیور کو گرفتار لیا مگر متاثرہ لڑکی نے بیان بدل کر رکشہ ڈرائیور پر الزام عائد کردیا ہے۔

گزشتہ روز لڑکی کے والد نے پولیس کو مقدمہ درج کراتے ہوئے کہا کہ اس کی بیٹی تلہ گنگ کے ایک دینی مدرسے میں عالمہ کا کورس کر رہی ہیں۔ وہ چھٹی پر گھر آنے کیلئے وین میں سوار ہوئی۔ راستے میں ساری سواریاں اترگئیں اور وہ گاڑی میں اکیلے رہ گئیں۔ جس پر کنڈیکٹر اور ڈرائیور نے اس کے ساتھ زیادتی کرنے کے بعد بے ہوشی کی حالت میں سڑک کنارے پھینک دیا۔

پولیس نے مقدمہ درج کرنے کے بعد متاثرہ لڑکی کو اسپتال منتقل کردیا اور ڈرائیور کو گرفتار کرکے تفتیش شروع کردی۔

ڈرائیور نے دوران تفتیش پولیس کو بتایا کہ میرے ساتھ کوئی کنڈکٹر نہیں ہوتا اور اس کی کسی بھی سواری سے تصدیق کرائی جاسکتی ہے۔

دوسری جانب طالبہ نے اپنا بیان تبدیل کرتے ہوئے کہا ہے کہ وین ڈرائیور نے نہیں بلکہ رکشہ ڈرائیور نے زیادتی کی ہے۔ پولیس اب رکشہ ڈرائیور کو تلاش کر رہی ہے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube