ہوم   > پاکستان

کیا ’کے فور‘ منصوبہ بھی چین کے پاس جارہا ہے؟

SAMAA | - Posted: Jan 24, 2020 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Jan 24, 2020 | Last Updated: 1 month ago

Credit: Samaa Digital

کراچی کو پانی کی فراہمی کے بڑے منصوبے ’کے فور‘ کی تکمیل کیلئے چین کی ایک کمپنی نے دلچسپی کا اظہار کردیا۔ یہ منصوبہ 18 سال قبل شروع کیا گیا تھا جس پر 14 ارب روپے کی خطیر رقم خرچ ہوچکی ہے تاہم یہ اب بھی نامکمل ہے۔

چین کے گیز ہوبا گروپ کمپنی لمیٹڈ نے وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کو ایک خط کے ذریعے پانی کی فراہمی کے میگا پراجیکٹ میں شرکت میں دلچسپی کا اظہار کیا ہے۔

پاکستان میں کمپنی کے ایگزیکٹو جی ایم شی یو کا کہنا ہے کہ ہمیں پتہ چلا ہے کہ ناممکن ڈیزائن کے باعث معاملات خوش اسلوبی سے آگے نہیں بڑھ رہے، ہم ڈیزائن کی فراہمی اور تعمیر میں مدد فراہم کرسکتے ہیں۔

کینجھر جھیل سے 121 کلو میٹر طویل کینال ’کے فور‘ کے ذریعے کراچی شہر کو پانی کی فراہمی کے منصوبے پر سندھ حکومت کو کافی دباؤ کا سامنا ہے۔

چینی کمپنی نے وزیراعلیٰ سیکریٹری کو 25 دسمبر 2019ء کو ارسال کیا گیا، جسے ضروری اقدامات کیلئے 17 جنوری 2020ء کو سیکریٹری لوکل گورنمنٹ ڈیپارٹمنٹ کو بھیجا گیا۔

کمپنی نے خط میں مزید لکھا ہے کہ وہ ہائیڈرو پاور، قابل تجدید توانائی، روڈ اور پیٹرو کیمیکل منصوبوں پر کام کرچکی ہے، جس میں قابل ذکر 1.9 ارب ڈالر کا سو کی کناری ہائیڈرو پاور پراجیکٹ، 3.3 ارب ڈالر کا ہائیڈرو پاور پراجیکٹ اور  1.9 ارب ڈٓلر کا مہمند ڈیم ہیں۔

سیکریٹری لوکل گورنمنٹ روشن علی شاہ نے ’کے فور‘ منصوبے پر غور کیلئے 27 جنوری کو اجلاس طلب کرلیا، قوی امکان ہے کہ چینی کمپنی کی پیشکش منظور کرلی جائے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
KARACHI, K-4, WATER SUPPLY PROJECT, PPP, MURAD ALI SHAH, CHINA, Gezhouba Group, executive general manager, Shi Yu
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube