ہوم   > پاکستان

ہم کشمیر میں ریفرنڈم کیلئے تیار ہیں، عمران خان

SAMAA | - Posted: Jan 17, 2020 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Jan 17, 2020 | Last Updated: 1 month ago

وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ پاکستان رائے شماری کے ذریعے آزاد کشمیر کے عوام کو ان کا “حق” دینے کے لئے تیار ہے یا یہ فیصلہ کرنے کے لئے کہ وہ پاکستان کے ساتھ ہی رہنا چاہتے ہیں یا آزاد رہنا چاہتے ہیں۔

وزیر اعظم عمران خان نے جرمن سرکاری نشریاتی ادارے ڈی ڈبلیو کی چیف ایڈیٹر اینس پوہل کے ساتھ ایک خصوصی انٹرویو میں کشمیر کے تنازعے سے متعلق بین الاقوامی برادری کے ’قدرے سرد‘ ردعمل پر تفصیلی بات چیت کی۔

عمران خان نے انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ کشمیری عوام کو فیصلہ کرنے دیں کہ پاکستان کے عوام اور ہندوستان کے زیر انتظام کشمیریوں کو فیصلہ کرنے دیں کہ وہ کیا کرنا چاہتے ہیں، انہوں نے کہا کہ پاکستان ریفرنڈم یا رائے شماری کے ذریعے ان کو یہ حق دینے کے لئے تیار ہے۔

وزیر اعظم نے کہا کہ انہیں فیصلہ کرنے دیں کہ وہ پاکستان کے ساتھ ہی رہنا چاہتے ہیں یا وہ آزاد ہونا چاہتے ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ آزاد کشمیر کے عوام بھارت کے زیر انتظام کشمیر کی نسبت بہت آزاد ہیں۔

وزیر اعظم نے کہا ہم دنیا میں کہیں بھی کسی کو بھی دعوت دیتے ہیں کہ آئیں پاکستان کا آزاد کشمیر دیکھیں اور پھر جاکر بھارتی کی طرف کا کشمیر دیکھیں۔

انہوں نے کہا کہ آزادکشمیر کے آزادانہ اور منصفانہ انتخابات ہیں، وہ اپنی حکومت منتخب کرتے ہیں وہ اپنے معاملات خود چلاتے ہیں۔

عمران خان نے کہا کہ وہ دنیا کو پہلے ہی خبردار کرچکے ہیں کہ بھارت میں کیا ہو رہا ہے، انہوں نے کہا کہ ہندوستان کو ایک انتہا پسند اور خصوصی نظریہ نے اپنے قبضے میں لے لیا ہے۔

ان کا خیال تھا کہ بھارتیہ جنتا پارٹی آر ایس ایس کے “ہندتوا” نظریہ پر عمل پیرا ہے،وزیر اعظم نے کہا کہ آر ایس ایس کا نظریہ مسلمانوں اور دیگر اقلیتوں ، عیسائیوں سے بھی نفرت پر مبنی ہے۔

انہوں نے کہا کہ یہ بھارت کے لیے ایک المیہ ہے اور اس کے ہمسایوں کے لیے بھی، کہ اس ملک پر آر ایس ایس نے قبضہ کر لیا ہے، وہی آر ایس ایس جس نے عظیم مہاتما گاندھی کو قتل کروایا تھا۔ بھارت ایٹمی ہتھیاروں کا حامل ایک ایسا ملک ہے، جسے انتہا پسند چلا رہے ہیں۔ کشمیر گزشتہ پانچ ماہ سے مسلسل محاصرے کی حالت میں ہے۔

یاد رہے کہ اگست 2019 میں وزیر اعظم نریندر مودی کی حکومت کی جانب سے بھارت کے زیرانتظام کشمیر کی خود مختار حیثیت کو منسوخ کرنے کے بعد دونوں ممالک کے مابین ایک بار پھر کشیدگی بڑھ گئی۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube