Monday, September 21, 2020  | 2 Safar, 1442
ہوم   > پاکستان

ادارے کے وقار کادفاع کرناجانتےہیں،ڈی جی آئی ایس پی آر

SAMAA | - Posted: Dec 19, 2019 | Last Updated: 9 months ago
SAMAA |
Posted: Dec 19, 2019 | Last Updated: 9 months ago

ڈی جی آئی ایس پی آر کے کہا ہے کہ ہم ملک میں کسی صورت انتشار پھیلنے نہیں دیں گے،اپنے ادارے کی عزت و وقار کو ملک کی عزت کے ساتھ قائم رکھیں گے جبکہ اندرونی و بیرونی دشمنوں، آلہ کاروں اور سہولت کاروں کو بھرپور جواب دیا جائے گا۔

سنگین غداری کیس میں فیصلہ کے بعد میڈیا بریفنگ میں ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور کا کہنا تھا کہ چند لوگ اندرونی اور بیرونی حملوں سے اشتعال دلاتے ہوئے آپس میں لڑانا چاہتے ہیں اور اس طرح سے پاکستان کو شکست دینے کے خواب دیکھ رہے ہیں، ایسا انشاء اللہ نہیں ہوسکے گا، ہمیں دھمکیوں کا پتہ ہے اور ہمارا اس پر رد عمل بھی تیار ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان آج ہائیبرڈ وار کا سامنا کرنا رہا ہے، ہم بیرونی اور اندرونی مشکلات کا سامنا کرسکتے ہیں تو ملک دشمن قوتوں کا ڈیزائن سمجھتے ہوئے اس کا بھی مقابلہ کریں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ دشمن اس کے سہولت کار اور آلہ کار کیا چاہتے ہیں ہمیں ہر چیز کا پتہ ہے، ملکی سلامتی کا ایک اہم ادارہ ہوتے ہوئے ہمیں موجودہ حالات کا ادراک ہے،پاکستان کو داخلی طور پر کمزور کرنے کی کوششیں ہوتی رہیں اور آج بھی ہورہی ہیں۔

ترجمان پاک فوج کا کہنا تھا کہ افواج پاکستان صرف ایک ادارہ نہیں ایک خاندان ہے، ہم عوام کی افواج ہیں اور جذبہ ایمانی کے بعد عوام کی حمایت سے مضبوط ہیں،ہم ملک کا دفاع بھی جانتے ہیں اور ادارے کی عزت و وقار کا دفاع بھی بہت اچھی طرح جانتے ہیں لیکن ہمارے لیے ملک پہلے ہے، ادارہ بعد میں ہے، آج اگر ملک کو ادارے کی قربانیوں، پرفارمنس اور یکجہتی کی ضرور ہے تو ہم دشمن کے ڈیزائن میں آکے اسے خراب نہیں ہونے دیں گے۔

گزشتہ روز اسپیشل سروسز گروپ (ایس ایس جی) کے ہیڈ کوارٹرز کا دورہ کے موقع پر آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا تھا کہ ہم نے اس ملک کو استحکام دینے کیلئے بہت لمبا سفر کیا، عوام اور افواج پاکستان نے بہت قربانیاں دی ہیں، اس استحکام کو کسی بھی صورت ریورس نہیں ہونے دیں گے، اپنے قدم پیچھے نہیں ہٹائیں گے،اپنے اندرونی اور بیرونی دشمنوں کو ناکام کریں گے۔

کچھ دیر پہلے آرمی چیف کی وزیراعظم پاکستان سے تفصیلی بات چیت ہوئی جس میں جنرل باجوہ نے انہیں آگاہ کیا کہ سنگین غداری کیس کے فیصلے کے بعد افواج پاکستان کے کیا جذبات ہیں۔ دوران گفتگو میڈیا ،تجزیوں، اور عوامی جذبات کو دیکھتے ہوئے معاملات کو آگے لے کر جانا ہے تاہم آرمی چیف اور وزیراعظم کی گفتگو سے متعلق تفصیلات حکومت آگاہ کرے گی۔

ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ فوج اور حکومت پچھلے چند سالوں سے مل کر ملک اس طرح لے جانا چاہتی ہے، جہاں ہر قسم کے خطرات ناکام ہوجائے اور اس طرف جائیں جہاں ہم جانا چاہتے ہیں اور انشاء اللہ ہم وہاں جائیں گے۔

جنرل آصف غفور کا مزید کہنا تھا کہ میری عوام سے درخواست ہے کہ وہ افواج پاکستان پر اعتماد رکھیں، ہم ملک میں کسی صورت انتشار پھیلنے نہیں دیں گے، ایسا کرتے ہوئے اپنے ادارے کی عزت و وقار کو ملک کی عزت کے ساتھ قائم رکھیں گے جبکہ اندرونی و بیرونی دشمنوں، آلہ کاروں اور سہولت کاروں کو بھرپور جواب دیا جائے گا۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube