ہوم   > پاکستان

چیف الیکشن کمشنرکی تعیناتی، اختر مینگل حکمران جماعت سے ناراض

SAMAA | - Posted: Dec 16, 2019 | Last Updated: 4 months ago
SAMAA |
Posted: Dec 16, 2019 | Last Updated: 4 months ago

سردار اختر مینگل نے حکمران جماعت پی ٹی آئی سے ناراضی کا اظہار کردیا، کہتے ہیں کہ حکومت نے اپنی اتحادی جماعت کو چیف الیکشن کمشنر اور بلوچستان کے ممبر کی تعیناتی سے متعلق اعتماد میں لینا بھی پسند نہیں کیا، حکومت کو خدشات و تحفظات سے آگاہ کردیا، اگر ایسے معاملات پر آئندہ بھی مشاورت نہ کی گئی تو اتحاد برقرار رکھنا مشکل ہوجائے گا۔

پنجاب کے علاقے ڈیرہ غازی خان میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بلوچستان نشینل پارٹی کے سربراہ، حکمران جماعت پی ٹی آئی کے اتحادی اور رکن قومی اسمبلی سردار اختر مینگل نے حکومت پر اہم حکومتی معاملات میں اعتماد میں نہ لینے پر تنقید کے نشتر برسائے اور کہا کہ پی ٹی آئی کی حکومت کا ساتھ ہم نے بلوچستان کے لاپتہ افراد سمیت دیگر 6 نکات پر دیا تھا اور حکومت نے ہمارے مطالبات پر عملدرآمد کیلئے ایک سال کی مہلت مانگی تھی تاہم ایک سال سے زائد کا عرصہ گزر جانے کے باوجود ہمارے مطالبات پر خاطر خواہ پیش رفت نہیں ہوسکی۔

یہ بھی پڑھیں : آرمی چیف کی ایکسٹینشن سے متعلق تفصیلی فیصلہ جاری

ان کا کہنا ہے کہ ہمارے خدشات پر حکومتی کمیٹی نے مزید مہلت مانگی ہے تاہم ہماری سینٹرل ایگزیکٹو کمیٹی کا اجلاس 22 دسمبر کو کراچی میں مہلت کے حکومتی مطالبے کا جائزہ لے گا، اگر سی ای سی نے حکومت کو مہلت دی تو ٹھیک ورنہ ہم حکومت کو ٹا ٹا، بائے بائے کہہ دیں گے۔

اختر مینگل نے مزید کہا کہ حکومت نے ہمیں چیف الیکشن کمشنر سمیت بلوچستان سے الیکشن کمیشن رکن کی تعیناتی سے متعلق مشاورت کرنا تو دور کی بات اعتماد میں لینا بھی پسند نہیں کیا، ہم نے حکومت کو چیف الیکشن کمشنر کی تعیناتی سے متعلق اپنے خدشات و تحفظات سے آگاہ کردیا۔

بی این پی نے حکومت کو خبردار کرتے ہوئے کہا کہ اتحادی اسے کہتے ہیں جسے ہر فیصلے پر اعتماد میں لیا جائے اور اگر حکومت نے اہم معاملات پر اعتماد میں نہ لیا تو پھر اتحاد برقرار نہیں رہ سکے گا۔

انہوں نے آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع سے متعلق سوال کے جواب میں کہا کہ پرانے اور نئے آرمی چیف سے کبھی ملک کے حالات نہیں بدلے، اگر مہنگائی میں کمی اور خوشحالی آئی ہو تو پھر آرمی چیف کے بدلنے یا نہ بدلنے کا سوال اہمیت رکھتا ہے۔

مزید جانیے : ایم کیو ایم میں پاکستان کے 8صوبے بنانے کا مطالبہ

وہ کہتے ہیں کہ پی ٹی آئی کی حکومت پرویز مشرف کو تحفظ دے رہی ہے، پرویز مشرف کے معاملے پر ہم نے حکومت سے اور اسمبلی کے فلور پر بھی اعتراض اٹھایا ہے، پرویز مشرف نے بلوچستان کے عوام پر سب سے زیادہ مظالم کئے مگر وہ ایک دن بھی تھانے نہیں گئے اور انہیں گارڈ آف آنر دے کر دبی بھیجا گیا تھا۔

ملک میں نئے صوبوں کے قیام سے متعلق بات کرتے ہوئے سردار اختر منیگل کا کہنا تھا کہ ایم کیو ایم نجانے کس کے اشارے پر سندھ کی تقسیم کا مطالبہ کررہی ہے تاہم بلوچستان نشینل پارٹی سندھ کی تقسیم کی مخالف ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
AKHTAR MENGAL, BNP, ARMY, COAS, PERVEZ MUSHARRAF, CEC, ELECTION COMMISSIONER, BALOCHISTAN, PTI, IMRAN KHAN
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube