Tuesday, October 20, 2020  | 2 Rabiulawal, 1442
ہوم   > پاکستان

ثاقب نثار چھوٹاآدمی، کڈنی سینٹر تباہ کیا، وفاقی وزیر

SAMAA | - Posted: Dec 15, 2019 | Last Updated: 10 months ago
SAMAA |
Posted: Dec 15, 2019 | Last Updated: 10 months ago

سما ٹی وی سے گفتگ

وفاقی وزیر برائے پارلیمانی امور اعظم سواتی نے کہا ہے کہ سابق چیف جسٹس ثاقب نثار چھوٹا آدمی ہے۔ وہ وزیراعظم عمران خان کو دکھانا چاہتے تھے کہ میں بڑا آدمی ہوں اور بڑی کرسی پر بیٹھا ہوں۔

اعظم سواتی اور سابق چیف جسٹس اس وقت آمنے سامنے آئے جب اعظم سواتی پر ایک خانہ بدوش بچے اور اس کی بہن کو تشدد کا نشانہ بنانے اور پھر پولیس پر دباؤ ڈال کر انہیں گرفتار کروانے کے الزامات عائد ہوئے۔ اس وقت اعظم سواتی سائنس و ٹیکنالوجی کے وفاقی وزیر تھے۔

معاملہ سپریم کورٹ پہنچا تو ثاقب نثار نے انہیں حکم دیا کہ عہدہ چھوڑ کر گھر چلے جائیں ورنہ آپ کو نا اہل کردوں گا جس پر اعظم سواتی نے استعفیٰ دینے کو ترجیح دی۔

سماء کے پروگرام سوال میں میزبان عنبر رحیم شمسی سے گفتگو کرتے ہوئے اعظم سواتی نے کہا کہ میرے اوپر کرپشن کا الزام نہیں بلکہ اختیارات کے غلط استعمال کا الزام تھا اور میں نے اسی وقت استعفیٰ دیا تھا۔

انہوں نے کہا کہ ثاقب نثار عدلیہ میں کسی قسم کی بہتری نہیں لانا چاہتے تھے بلکہ ایڈوینچر کے شوقین تھے اور انہوں نے سارا ڈنڈورا اس لیے مچایا کہ وہ عمران خان کو اپنی اہمیت دکھانا چاہتے تھے۔ اعظم سواتی کے بقول وہ عمران خان کو دکھانا چاہتے تھے کہ میں بڑا آدمی ہوں اور ایک بڑی کرسی پر بیٹھا ہوں۔ 

اعظم سواتی نے مزید کہا کہ ثاقب نثار نے لاہور میں بننے والا پاکستان کڈنی اینڈ لیور انسٹی ٹیوٹ بھی تباہ کیا۔

یاد رہے کہ سابق چیف جسٹس ثاقب نثار نے 2018 میں پاکستان کڈنی اینڈ لیور انسٹی ٹیوٹ میں مبینہ بے ضابطگیوں پر از خود نوٹس لیا تھا۔ انہوں نے پی کے ایل آئی کے صدر ڈاکٹر سعید اختر کو عہدے سے ہٹاتے ہوئے انہیں بیرون ملک جانے سے بھی روک دیا تھا۔

ڈاکٹر سعید اختر نے 5 اکتوبر 2019 کو بیان جاری کرتے ہوئے کہا تھا کہ سابق چیف جسٹس ثاقب نثار سے ملاقات کیلئے ان کے گھر گئے تھے جہاں میں نے مزید پی کے ایل آئی کے بارے میں بتانا شروع کیا تو وہ اچانک غصے میں آ گئے۔

ملاقات میں چیف جسٹس کے بھائی نے کہا کہ بھائی جان ان سے پوچھیں کہ ان کو 20 ارب روپے کس بات کے ملے ہیں۔ جس پر میں نے کہا مجھے توکوئی بیس ارب روپے نہیں ملے، ایک ادارے کیلئے چیف منسٹر نے بیس ارب روپے مختص کیے ہیں۔

ڈاکٹر سعید اختر کے مطابق پھر وہ کہنے لگے کہ بھائی جان آپ کو یاد ہے کہ سروسز اسپتال میں جب پانی کی ٹیبز بھی ٹوٹی ہوئی تھیں تو ہم نے چندہ جمع کر کے ٹھیک کروائیں کیونکہ وہ بھی ٹھیک کروانے کے پیسے نہیں تھے اور ان کو بیس ارب روپے دیئے گئے۔

ڈاکٹر سعید کے مطابق پھر انہوں نے کہا کہ بھائی جان یہ آٹھ سے دس لاکھ روپے تنخواہ لے رہے ہیں۔ میں نے کہا کہ جن ڈاکٹروں کو میں لے کر آیا ہوں ان میں سے کوئی پانچ لاکھ اور کوئی دس لاکھ ڈالر کماتا تھا۔ یہ دس لاکھ روپے باہر ممالک میں ان کی ایک دن کی تنخواہ بنتی تھی۔ یہ لوگ دس لاکھ کیلیے نہیں بلکہ ایک جذبے کیلیے پاکستان آئے ہیں۔ اس پر سابق چیف جسٹس ثاقب نثار غصے میں کھڑے ہو گئے اور کہنے لگے کہ میرا بھائی ایک لاکھ 35 ہزار روپے تنخواہ لیتا ہے تو آپ نے کیسے انہیں دس لاکھ روپے کی آفر کی۔

ڈاکٹر سعید نے کہا کہ میں نے جواب دیا کہ ضرور ایک لاکھ 35 ہزار روپے تنخواہ لیتے ہوں گے لیکن وہ شام کو پرائیوٹ پریکٹس کرتے ہیں جس میں وہ اچھے پیسے بنا لیتے ہیں لیکن ہمارے ڈاکٹرز ادارے کے باہر کوئی پریکٹس نہیں کر سکتے۔ وہاں سے وہ بہت غصے میں آ گئے اور کہا کہ میں آپ کے خلاف سو موٹو نوٹس لوں گا اور آپ لوگوں کو دیکھ لوں گا۔ فورا چیف سیکریٹری کو بلاﺅ، ہیلتھ سیکریٹری کو بلایا گیا۔

بعد ازاں 13 اکتوبر 2019 کو قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے پارلیمانی امور کے اجلاس میں مسلم لیگ (ن) کے رکن قومی اسمبلی چوہدری محمود بشیر ورک نے الزام لگایا کہ سابق چیف جسٹس سے ان کے بھائی نے ذاتی کمیشن کیلئے کے پی ایل آئی بند کرانے میں مدد لی اور بھاری کمیشن لے کر مریض بھارت بھجوانے کا کاروبار کیا جاتا رہا۔

کمیٹی کے رکن مبشر رانا کا کہنا تھا کہ شہبازشریف نے ماہر ڈاکٹر بیرون ملک سے یہاں چند لاکھ میں متعین کرائے لیکن کڈنی اینڈ لیور سینٹرکو سیاسی مسئلہ بناکر اسپتال کو غیر فعال کردیا گیا۔

اس پر وزیر مملکت برائے پارلیمانی امور علی محمد خان کا کہنا تھا کہ اسپتال کس نے بنایا۔ کون قصور وار ہے لیکن خوار عوام ہوگئے۔ یہ مسئلہ سابق چیف جسٹس کے از خود نوٹس سے پیش آیا۔ بشیر ورک نے کہا کہ سابق چیف جسٹس نے گھر بلاکر بھائی کے سامنے سربراہ پی کے ایل آئی کی بے عزتی بھی کی تھی۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube