ہوم   >  پاکستان

پاکستانی سمندری حدود میں بلیک بلینکٹ آکٹوپس کی موجودگی کاانکشاف

SAMAA | - Posted: Dec 13, 2019 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Dec 13, 2019 | Last Updated: 1 month ago

تصویر : ڈبلیو ڈبلیو ایف

پاکستان کی سمندری حدود سے پہلی مرتبہ دو زندہ بلیک بلینکٹ آکٹوپس ملے ہیں۔

بی بی سی کی رپورٹ کے مطابق رواں ہفتے پاکستانی ماہی گیروں نے سندھ اور بلوچستان کے قریبی سمندر سے دو زندہ آکٹوپس ملے جنہیں واپس سمندر میں چھوڑ دیا گیا۔

برطانوی میڈیا سے بات کرتے ہوئے ماحول کی بقاء کے لیے کام کرنے والے عالمی ادارے ڈبلیو ڈبلیو ایف کے ترجمان مشیر محمد معظم نے بتایا کہ سندھ اور بلوچستان کے قریبی سمندر سے ملنے والے آکٹوپس کی لمبائی1 میٹر کے قریب جبکہ وزن 2 سے ڈھائی کلو کے قریب تھا ایسے بلیک بلینکٹ آکٹوپس بحرالکاہل، بحرِ اوقیانوس اور بحیرہ عرب میں پائے جاتے ہیں، پاکستان کی سمندری حدود میں ان کا ملنا پاکستان کی سمندری حیات میں ایک اضافہ ہے۔

واضع رہے کہ آکٹوپس کا شمار دنیا کے انوکھے گوشت خور جانداروں میں ہوتا ہے، جس کے آٹھ بازو، تین دل اور خون کا رنگ نیلا ہوتا ہے، جبکہ چھوٹی مچھلیاں، جھینگے اور گھونگوں کے علاوہ بعض اقسام کی جیلی فش بھی اس کی خوراک کا حصہ ہیں۔

یہ آکٹوپس رنگ تبدیل کرنے کے علاوہ جسامت میں کوئی ہڈی نہ ہونے کی وجہ سے یہ کسی بھی سانچے میں ڈھلنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔

 

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
متعلقہ خبریں
 
 
 
 
 
 
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube