ہوم   >  پاکستان

چیف الیکشن کمشنر کی تقرری کامعاملہ سپریم کورٹ پہنچ گیا

SAMAA | - Posted: Dec 4, 2019 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Dec 4, 2019 | Last Updated: 2 months ago

اپوزیشن جماعتوں کی رہبر کمیٹی نے چیف الیکشن کمشنر کی تقرری کے معاملے پر سپریم کورٹ سے رجوع کرلیا، درخواست میں الیکشن کمیشن پاکستان اور وفاقی حکومت کو فریق بنایا گیا ہے۔

چیف الیکشن کمشنر کی ریٹائرمنٹ میں صرف ایک دن باقی ہے، نئے الیکشن کمشنر کی تقرری کے معاملے پر اپوزیشن رہبر کمیٹی نے سپریم کورٹ میں درخواست دائر کردی، جس میں وفاقی حکومت اور الیکشن کمیشن پاکستان کو فریق بنایا گیا ہے۔

درخواست میں مؤقف اختیار کیا گیا ہے کہ چیف الیکشن کمشنر 5 دسمبر کو ریٹائر ہوجائیں گے، ریٹائرمنٹ کے بعد الیکشن کمیشن غیرفعال ہوجائیگا، الیکشن کمیشن غیرفعال ہونے سے انتخابات کا پورا سسٹم رک جائیگا۔

مزید جانیے : الیکشن کمیشن کے2ممبران کی تقرری کا صدارتی آرڈرمعطل

الیکشن کمیشن پاکستان میں تاحال 2 ممبران کی کمی ہے، 10 ماہ گزرنے کے باوجود سندھ اور بلوچستان سے ممبران کا تقرر اب تک نہیں ہوسکا۔ وزیراعظم عمران خان نے اسپیکر قومی اسمبلی اور چیئرمین سینیٹ کو خط کے ذریعے 3، 3 نام تجویز کئے ہیں۔

اس سے قبل گزشتہ ماہ الیکشن کمیشن کے 2 ممبران خالد صدیقی اور منیر کاکڑ کی تقرری پر صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کی جانب سے نوٹی فکیشن جاری کیا گیا تھا، جسے اسلام آباد ہائیکورٹ نے معطل کردیا تھا۔

چیف الیکشن کمشنر سردار محمد رضا نے بھی دونوں ممبران سے حلف لینے سے انکار کردیا تھا ان کا مؤقف تھا کہ نئے ارکان کا تقرر آئین کیخلاف کیا گیا ہے۔

پی ٹی آئی کے سینیٹر شبلی فراز نے اپوزیشن کی رہبر کمیٹی کی جانب سے چیف الیکشن کمشنر کی تقرری کا معاملہ سپریم کورٹ لے جانے پر شدید رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ معاملہ عدالت میں لے جانا پارلیمنٹ کو کمزور کرنے کے مترادف ہے، ایسے اقدامات سے پارلیمنٹ اور سیاسی نظام کمزور ہوگا 4 ارکان میں سے سینئر ترین ممبر قائم مقام چیف الیکشن کمشنر ہوگا۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
متعلقہ خبریں
 
WhatsApp FaceBook
 
 
 
 
 
 
 
ECP, CHAIRMAN, OPPOSITION REHBAR COMMITTEE, PMLN, PPP, PTI, JUIF, SCP, SUPREME COURT, PAKISTAN, ELECTION COMMISSION
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube