Monday, July 6, 2020  | 14 ZUL-QAADAH, 1441
ہوم   > پاکستان

اسحاق ڈارکیخلاف ریفرنس،تفتیشی افسرپرجرح مکمل نہ ہوسکی

SAMAA | - Posted: Nov 20, 2019 | Last Updated: 8 months ago
SAMAA |
Posted: Nov 20, 2019 | Last Updated: 8 months ago

فوٹو: اے ایف پی

سابق وزيرخزانہ اسحاق ڈارکیخلاف آمدن سےزائد اثاثہ جات ریفرنس کی سماعت کے دوران وکیل صفائی کی جانب سے نیب ریکارڈ پراعتراض کے باعث تفتیشی افسر پرجرح مکمل نہ ہوسکی۔

 بدھ کو اسحاق ڈار کیخلاف آمدن سے زائد اثاثہ جات کی سماعت احتساب عدالت کے جج محمد بشير نے کی۔شریک ملزمان نعیم محمود اورمنصور رضا عدالت ميں پيش ہوئے۔

وکیل صفائی قاضی مصباح نے استغاثہ کےآخری گواہ تفتیشی افسرنادرعباس پرجرح کرتے ہوئے کہا کہ 1995ميں 20 لاکھ 48 ہزار ڈالرزکے اکاؤنٹ کی تفتیشن کی گئی، کیا ان اکاؤنٹس سے شریک ملزمان کا کوئی تعلق ثابت ہوا؟۔تفتيشی افسر نے جواب ديا کہ یہ حصہ میری تحقیقات کا نہیں بلکہ جے آئی ٹی رپورٹ کا ہے، اسحاق ڈارکےغیرملکی اثاثوں سے شریک ملزمان کے تعلق کاثبوت نہیں ملا۔

اس دوران نیب پراسیکیوٹر افضل قریشی نے وکيل صفائی کے سوالات پر اعتراض کرتے ہوئے کہا کہ اشتہاری ملزم سے متعلق دیگر ملزمان کے وکیل کیسے سوال کرسکتے ہیں۔

وکیل صفائی قاضی مصباح نے نيب کی جانب سے عدالت میں پیش کردہ اکاؤنٹس کی ٹرانزیکشنز کے ريکارڈ پر اعتراض اٹھايا جس کے باعث تفتیشی افسرپر جرح مکمل نہ ہوسکی۔

عدالت نے تفتیشی افسر کو آئندہ سماعت پر ریکارڈ لانے کی ہدايت کرتے ہوئے مزيد سماعت 27 نومبرتک ملتوی کردی۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube