Thursday, January 20, 2022  | 16 Jamadilakhir, 1443

تھر سے قیمتی پتھر نکالا جانے لگا،لينڈ سلائڈنگ کاخطرہ

SAMAA | - Posted: Nov 12, 2019 | Last Updated: 2 years ago
SAMAA |
Posted: Nov 12, 2019 | Last Updated: 2 years ago

تھر کے خوبصورت کارونجھر جبل کے قیمتی پہاڑوں پر قبضہ مافیہ نے قبضہ جمالیا،غیرقانونی پہاڑوں کی کٹائی سے خوبصورت پھاڑوں کی قدرتی خوبصورتی متاثر ہونے لگی۔

قیمتی پتھر گرینائٹ سے مالا مال تھر کے پھاڑی سلسلے کارونجھر میں مافیہ سرگرم ہوگئی پھاڑوں کی غیرقانونی کٹائی کا سلسلہ عروج پر پہنچ گیا جس کے باعث خوبصورت پھاڑوں کی بے رحمی سے کٹائی انکی بقا کے لئے خطرہ بن گئی ہے جس پر تھر کی عوام سراپا احتجاج ہے۔

گرینائٹ پھاڑوں کی کٹائی کرکے بھاری بھرکم پتھروں کی غیرقانونی منتقلی زوروں پر پہنچ گئی ہے اور روزانہ کئی سو ٹن قیمتی پتھر کاٹ کر غیرقانونی طریقے سے فروخت کیلئے مختلف شہروں تک پہنچایا جارہا ہے جس پر ضلع انتظامیہ اور پولیس بھی بے بس دکھائی دے رہی ہے۔

خوبصورت پھاڑوں کی بے رحمی سے کٹائی سے جہاں انکی قدرتی خوبصورتی متاثرہورہی ہے تو وہیں پھاڑ بھی کمزور پڑرہے اور لینڈسلائیڈنگ کے بھی خدشات پیدا ہوگئے جو وہاں کے مقامی افراد کے لئے بڑے حادثات کا باعث بن سکتے ہیں۔

تھر کی عوام نے پھاڑوں کی غیرقانونی کٹائی کے خلاف سوشل میڈیا پر بھرپور مہم شروع کردی ہے، تھرپارکر کی عوام کا وزیراعظم پاکستان عمران خان سے مطالبہ کیا ہے کہ قیمتی پھاڑوں کی غیرقانونی کٹائی ختم کروا کر انکی حفاظت کئے اقدامات اٹھانے کی ہدایت جاری کی جائیں۔

دوسری جانب محکمہ معدنی وسائل کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر کارونجھر کے پہاڑوں کی کٹائی غیرقانونی طور گرینیٹ نکالنے والوں کے خلاف کاروائی کی ہدایت جاری کردی ہے،ایس ایس پی اور ڈی سی تھرپارکر سمیت دیگر اداروں کو لیٹر جاری کرتے کہا ہے کہ کارونجھر پہاڑ کی غیرقانونی کٹائی گرینیائیٹ اوٹھانے والوں کے خلاف مقدمہ درج کرکے ملزمان کے خلاف کاروائی کی جائے۔

اسسٹنٹ ڈائریکٹر منرلز اسٹنٹ سندھ کی ثقافتی اور فطری خوبصورتی سے مالہ مال کارونجھر کی کٹائی والے سلسلے کے خلاف نوٹس لیتے ننگرپارکر پولیس کو بھی لیٹر جاری کردیا ہےجس میں انہوں یہ بھی کہا ہے کہ کارونجھر پہاڑ کی کٹائی سے گرینائیٹ اوٹھانے والے عمل کو غیرقانونی قرار دیا ہے۔

 

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube