Monday, October 19, 2020  | 1 Rabiulawal, 1442
ہوم   > پاکستان

کرتار پور راہداری کا افتتاح کل 9نومبر کو ہوگا

SAMAA | - Posted: Nov 8, 2019 | Last Updated: 12 months ago
SAMAA |
Posted: Nov 8, 2019 | Last Updated: 12 months ago

بابا گرونانک کی 550 ویں سالگرہ پر یادگاری ٹکٹ آج سے جاری کردیا گیا ہے، جو ملک بھر کے تمام ڈاک خانوں میں دستیاب ہوگا۔  راہداری کا تاریخی افتتاح ہفتہ 9 نومبر کو ہو رہا ہے، جہاں 10 ہزار افراد تقریب میں شریک ہوں گے۔

بابا گرونانک کی 550 ویں سالگرہ پر یادگاری ٹکٹ آج سے جاری کردیا گیا ہے، جو ملک بھر کے تمام ڈاک خانوں میں دستیاب ہوگا۔ تاریخی راہداری کا افتتاح ہفتہ 9 نومبر کو ہو رہا ہے، جہاں 10 ہزار افراد تقریب میں شریک ہوں گے۔

کرتار پور راہداری نومبر میں کھولنے کا اعلان

پاکستان اور بھارت کے درمیان سکھوں کی مذہبی یادگار کرتار پور راہداری کا تاریخی افتتاح کل بروز 9 نومبر 2019 کو کیا جائے گا۔ اس موقع پر 5 ہزار ویزے جاری کیے گئے ہیں۔ افتتاح کے دن ويزے اور 20 ڈالر فيس کی شرط ختم کردی گئی ہے۔

بابا گرونانک کی 550ویں سالگرہ کے موقع پر سکھ برادری سے اظہار یکجہتی کرنے کیلئے پاکستان پوسٹ نے یادگاری ٹکٹ بھی جاری کردیا، جو 8 نومبر سے ملک بھر کے تمام ٹاک خانوں میں دستیاب ہے۔ یہ ٹکٹ 8 روپے کا ہے۔ اس سے قبل 50 روپے مالیت کے سکے بھی جاری کئے گئے ہیں۔

ٹکٹ کا اجراء وزیراعظم عمران خان کی منظوری کے بعد کیا گیا، حکومت کی جانب سے ننکانہ صاحب میں ڈاک خانہ بھی کھولا گیا ہے۔ کرتارپور کمپلیکس میں ڈاکخانہ سے سکھ یاتری یادگاری ڈاک ٹکٹ خرید سکیں گے۔

نوجوت سنگھ سدھو

دوسری جانب بھارت کے سابق ٹیسٹ کرکٹر اور بھارتی پنجاب کے سابق وزیر نوجوت سنگھ سدھو بھارت کی مرکزی حکومت سے کرتاپور جانے کی اجازت حاصل کرنے میں کامیاب ہوگئے ہیں۔

سدھو کے علاوہ بھارت کے سابق وزیر اعظم من موہن سنگھ، بھارتی پنجاب کے وزیر اعلیٰ کیپٹن امرندر سنگھ اور بھارت کے مرکزی وزرا ہردیپ پوری اور ہرسمرت کور بادل بھی سکھ یاتریوں کے ساتھ وفد کا حصہ ہوں گے۔

کیا پاسپورٹ کی شرط ختم نہیں ہوئی؟

بھارت کی وزارتِ خارجہ کے ترجمان رویش کمار نے دعویٰ کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان کی طرف سے پاسپورٹ کی شرط ختم کیے جانے سے متعلق ملنے والی اطلاعات واضح نہیں ہیں۔ رویش کمار کا کہنا تھا کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان کرتارپور راہداری سے متعلق طے پانے والے سمجھوتے میں اب تک کوئی تبدیلی نہیں ہوئی اور نہ ہی کوئی فریق اسے یک طرفہ طور پر تبدیل کر سکتا ہے۔ رویش کمار کے بقول، یہ شرط اب بھی برقرار ہے کہ 9 نومبر یا اس کے بعد جو بھی بھارتی شہری کرتارپور جائے گا، اس کے پاس پاسپورٹ ہونا ضروری ہے۔

ویزا فری انٹری

یاد رہے کہ پاکستان نے بابا گرونانک کی 550ویں سالگرہ کے موقع پر سکھ یاتریوں کیلئے ویزا فری انٹری کا بھی اعلان کر دیا ہے۔ سکھ مذہب کے بانی بابا گرونانک نے اپنی زندگی کے آخری چند برس اسی مقام پر گزارے تھے۔

محل وقوع

کرتارپور کوریڈور بھارتی پنجاب میں ڈیرہ بابا نانک گردوارے کو پاکستانی پنجاب کے شہر نارووال میں موجود دربار صاحب گردوارے سے ملاتا ہے۔ اس مقام پر ان کی سمادھی (قبر) بھی موجود ہے جس کی سکھ مذہب میں بہت زیادہ اہمیت ہے۔

دنیا بھر سے سکھوں کی آمد جاری

سکھ مذہب کے بانی بابا گورونانک دیو جی کے جنم دن کی تقریبات میں شرکت کے لیے بھارت سمیت دنیا بھر سے سکھ مذہب کے پیروکاروں کی پاکستان آمد کا سلسلہ بھی جاری ہے۔ سکھوں کے روحانی پیشوا بابا گورونانک دیو جی کا جنم دن ہر سال نومبر کے مہینے میں منایا جاتا ہے۔ جنم دن کی تقریبات 10 روز جاری رہتی ہیں۔ جس میں شرکت کے لیے ہر سال بڑی تعداد میں بھارت سمیت دنیا بھر سے سکھ یاتری پاکستان آتے ہیں۔ جہاں وہ ننکانہ صاحب اور کرتارپور سمیت دیگر مقامات پر مذہبی رسومات میں حصہ لیتے ہیں۔

پاکستان میں اقلیتوں کے مقدس مقامات کی دیکھ بھال پر مامور ادارے متروکہ وقف املاک بورڈ کے ڈپٹی سیکریٹری عمران گوندل کہتے ہیں کہ منگل کے روز واہگہ بارڈر کے راستے بھارت سے پیدل 3 ہزار کے قریب سکھ یاتری پاکستان پہنچے ہیں۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube