Friday, October 30, 2020  | 12 Rabiulawal, 1442
ہوم   > پاکستان

ٹروپیکل سائیکلون”کیار”انتہائی شدید سمندری طوفان ميں تبديل

SAMAA | - Posted: Oct 28, 2019 | Last Updated: 1 year ago
SAMAA |
Posted: Oct 28, 2019 | Last Updated: 1 year ago

سمندرمیں لہریں9-10فٹ بلندہونیکاخدشہ

بحيرہ عرب ميں بننے والا سمندری طوفان " کيار " شدت اختيار کرگيا ہے۔ طوفان کراچی سے 800 کلو ميٹر دور ہے۔ کراچی میں 35  کلو ميٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے گردآلود ہوائیں چلنے کا امکان ہے۔ بارش کے باعث کراچی میں سخت سردی پڑے گی۔

محکمہ موسميات کا کہنا ہے کہ طوفان سے کراچی کو براہ راست کوئی خطرہ نہيں ہے، البتہ سندھ اور بلوچستان کی ساحلی پٹی پر گرج چمک اور آندھی کے ساتھ ہلکی بارش کا امکان ہے۔ ترجمان کے مطابق سال 2007 کے بعد کيار نامی سائيکلون سب سے زیادہ طاقت ور ہے۔

 

میٹ آفس کا مزید کہنا ہے کہ طوفان سے سمندری لہريں بلند ہونے کے پيش نظر ماہی گيروں کو گہرے سمندر ميں نہ جانے کی ہدايت کی گئی ہے۔ کراچی اور مکران کے ساحلی علاقوں پر 28 سے 31  اکتوبر تک بارش متوقع ہے۔ طوفان کا ممکنہ رخ عمان کی جانب ہے۔

 

پیر سے سندھ کی ساحلی علاقوں تھر پارکر، بدین اور ٹھٹھہ میں مطلع ابرآلود رہنے کے علاوہ ہلکی بارش اور گرد آلود ہوائیں چلنے کا امکان ہے۔ محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ طوفان بحیرہ عرب کے مشرقی وسطیٰ حصے میں موجود ہے اور کراچي سے تقريبا 800 کلوميٹر دور ہے، جو شمال مغرب کی جانب بڑھ رہا ہے۔

 

طوفان کے مرکز میں ہواؤں کی رفتار 210 سے 220 کلومیٹر فی گھنٹہ ہے۔ ماہی گيروں کو خبردار کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ گہرے سمندر ميں نہ جائيں، طوفان کے باعث سمندری لہريں 9 سے 10فٹ بلند ہونے کا انديشہ ہے۔

 

دوسری جانب پیر کے روز ملک کے دیگر حصوں میں موسم خشک جبکہ شمالی علاقہ جات میں موسم سرد رہے گا۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube