ہوم   >  پاکستان

عمران خان اور مراد علی شاہ کیوں نہیں ملتے؟

2 months ago

وزیراعظم وزیراعلیٰ کے کسی خط کا جواب بھی نہیں دیتے

سندھ کے وزیر اطلاعات سعید غنی نے کہا ہے کہ وزیراعظم کسی صوبے کے دورے پر ہوتے ہیں تو اس صوبے کے وزیراعلیٰ کا بحیثیت صوبائی چیف ایگزٹیو بہت سے اجلاس میں موجود ہونا ضروری ہوتا ہے لیکن ایک عجیب بات یہ ہے کہ عمران خان سندھ کے دورے کے موقع پر مراد علی شاہ کو اعتماد میں نہیں لیتے اور نہ ہی انہیں کچھ بتانا ضروری سمجھتے ہیں۔

سماء کے پروگرام آواز میں گفتگو کرتے ہوئے سعید غنی نے کہا کہ پیپلز پارٹی اور تحریک انصاف میں سیاسی اختلافات ہیں اور ہونے بھی چاہیئے لیکن وزیراعظم اور وزیراعلیٰ کی کچھ آئینی ذمہ داریاں اور حقوق ہوتے ہیں۔

وزیر اطلاعات سندھ نے کہا کہ عموماً جب ایک وزیراعظم کسی صوبے کا دورہ کرتا ہے تو اپنا شیڈول اس صوبے کے وزیراعلیٰ کو بتاتا ہے جس میں آمد کا وقت، قیام کی مدت، مصروفیات کی تفصیل اور روانگی کا وقت وغیرہ بھی شامل ہیں لیکن سندھ کے ساتھ ایسا نہیں کیا جا رہا۔

سعید غنی نے کہا کہ وزیراعظم کے سندھ کے خصوصاً تین گزشتہ دوروں کے موقع پر وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کو بالکل اندھیرے میں رکھا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ بہت سے اجلاس ایسے ہوتے ہیں جن میں مراد علی شاہ کی موجودگی بہت ضروری ہوتی ہے لیکن اس حوالے سے وزیراعلیٰ سندھ کو مسلسل نظر انداز کیا جا رہا ہے۔

وزیر اطلاعات نے کہا کہ جب مراد علی شاہ کو بتایا ہی نہیں جاتا کہ عمران خان کس وقت سندھ پہنچیں گے تو وہ کس طرح ان کے استقبال کےلیے ایئرپورٹ جائیں، وہ یہ تو نہیں کر سکتے کہ اندازاً ہی جا کر ایئرپورٹ پر کھڑے ہو جائیں اور اپنے کام چھوڑ کر آمد کا انتظار کرتے رہیں۔

سعید غنی نے کہا یہی وجوہات ہیں کہ وزیراعلیٰ سندھ وزیراعظم عمران خان سے ملاقات نہیں کر پا رہے اور نتیجتاً صوبے کے حوالے سے ضروری معاملات پر بھی تبادلہ خیال نہیں ہو پاتا۔

وزیر اطلاعات نے ایک اور مسئلے کی جانب توجہ مبذول کراتے ہوئے کہا کہ وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے وزیراعظم عمران خان کو وفاق سے وابستہ صوبے کے ان مسائل کے حوالے سے اب تک کل 25 خطوط لکھے ہیں لیکن ان میں سے ایک کا بھی جواب نہیں آیا۔

سعید غنی نے بتایا کہ ان خطوط میں کراچی سرکلر ریلوے کے علاوہ وفاق کی جانب سے جاری کیے جانے والے فنڈز میں کتوتی کے مسائل بھی شامل ہیں۔

 

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
متعلقہ خبریں
 
 
 
 
 
 
 
Saeed Ghani, Murad Ali Shah, PM Imran Khan, CM Sindh, PPP, PTI