ہوم   >  پاکستان

اسلام آباد کا ترمیمی ماسٹرپلان تیار

1 month ago

دارالحکومت 1960 میں بسایا گیا تھا

وفاقی دارالحکومت کے ماسٹر پلان میں تقریباً 60 سال بعد بڑی تبدیلیاں کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ مختلف سیکٹرز میں قائم کچی آبادیوں کو متبادل جگہ منتقل کیا جائے گا۔

وفاقی کابینہ کی جانب سے منظوری دیے جانے والے اسلام آباد کے نئے ماسٹرپلان کے تحت شہرمیں بے ہنگم ہاؤسنگ سوسائٹیزکی تعمیرروکتے ہوئے خلاف ضابطہ بسائی گئی کچی آبادیوں کو بھی شہر سے باہر منتقل کیا جائے گا۔

حکومت کی جانب سے 1960 میں بسائے جانے والے وفاقی دارالحکومت کا ترمیمی ماسٹر پلان تیار کر لیاہے۔

ہاؤسنگ سوسائٹیز کی تعمیر کیلئے رقبے کی کم از کم حد 1200کنال کرنے اورمختلف زونز میں زمینوں کی بے قاعدگیاں ختم کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

چیئرمین کیپٹل ڈویلپمنٹ اتھارٹی عامرعلی احمد کا کہنا ہے کہ لوگ اسلام آباد کے دیہی علاقوں میں زمین خریدکر5 مرلےاور 7 مرلے کے پلاٹ بنا کر بیچ دیتے تھےجس سےمسائل پیدا ہوتے تھے ۔ زون 3 کی محفوظ بنایا جائے گا جبکہ زون 4 اور 5 میں کئی جگہوں کو ریگولیٹ کیا جائے گا۔

چیئرمین سی ڈی اے نے بتایاکہ کچی آبادیوں کو متبادل جگہ منتقل کیاجائے گا۔ عمارتوں کی بلندی بھی قواعد کے مطابق ہوگی۔

نئی سڑک کیساتھ فٹ پاتھ کی تعمیربھی لازمی قراردی جائے گی۔ عامرعلی احمد کے مطابق یہ نہیں ہے کہ آپ کا 8 کنال کا پلاٹ ہے اور8 کنال آپ نے اضافی لے لیے ہیں۔

حکام کے مطابق شہر میں قلت آب پر قابو پانے کیلئے تربیلا اور غازی بروتھا ڈیم سے یومیہ 20 کروڑ گیلن پانی فراہم کیا جائے گا، اس کے علاوہ مزید پارکس اور سیکٹرز کیساتھ 5 نئے بس روٹس کی تعمیر بھی نئے ماسٹر پلان میں شامل ہے۔

 
TOPICS:

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
متعلقہ خبریں