ہوم   >  پاکستان

برطانوی شاہی جوڑا پاکستان پہنچ گیا

4 weeks ago

ONLINE PHOTO

برطانوی شہزادہ ولیم اور شہزادی کیٹ مڈلٹن پاکستان کے تاریخی دورے پر اسلام آباد پہنچ گئے، نورخان ائیربیس پر وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے معزز مہمانوں کا استقبال کیا۔

انتظار کی گھڑياں ختم ہوگئیں برطانيہ سے شاہی جوڑا تاريخی دورے پر پاکستان پہنچ گيا، شہزادہ ولیم اور شہزادی کیٹ مڈلٹن نور خان ايئر بيس پہنچے تو وزيرخارجہ شاہ محمود قريشی نے استقبال کيا اور پھولوں کا گلدستہ پیش کیا ، شاہی مہمانوں کو گارڈ آف آنر بھی ديا گيا۔

برطانوی شاہی جوڑا چار روزہ دورے ميں صدرمملکت اور وزیراعظم سے ملاقات کرے گا، لاہورمیں تاریخی مقامات کی سیر اور کرکٹ اکیڈمی کا دورہ بھی شيڈول ميں شامل ہے، وليم اور کيٹ شمالی علاقوں کی سير کو بھی جائيں گے۔

برطانوی میڈیا کے مطابق برطانوی شاہی جوڑے کے ساتھ مخصوص ہير ڈريسر کے علاوہ نجی سیکيورٹی گارڈز، ذاتی معاونين کی ٹيم اور پروگرام کوآرڈینیٹر بھی ساتھ آئيں ہیں۔

ترجمان دفتر خارجہ کہتے ہيں شاہی جوڑے کا دورہ پاکستان میں امن و امان کی بہتر صورتحال پر اعتماد کا اظہار ہے، دورے سے پاکستان اور برطانيہ کے تاریخی تعلقات مزید مستحکم ہوں گے۔

پاکستان میں برطانوی ہائی کمشنرتھامس ڈریونے بتایا کہ دورے کے دوران وہ پاکستان کے مختلف علاقوں میں جائیں گے، ہائی کمشنر نے ٹوئیٹر پراپنے ویڈیو پیغام میں کہا کہ دورے سے پاکستان کو روشن خیال اور ترقی پسند ملک کی حیثیت سے اجاگر کرنے میں مدد ملے گی۔

انہوں نے کہا کہ دورے کے دوران شاہی جوڑے کی متعدد پاکستانیوں خصوصاً نوجوانوں سے ملاقات متوقع ہے جوملک کامستقبل بدل رہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ شہزادہ ولیم اور شہزادی کیٹ پاکستان کے عوام کے ساتھ پائیدار دوستی کے خواہش مند ہیں۔

اسلام آباد سے تعلق رکھنے والی مصورہ رابعہ ذاکر نے برطانوی شاہی جوڑے کی آمد کے موقع پر شہزادہ ولیم اور شہزادی کیٹ میڈلٹن کی شادی کا پورٹریٹ تیار کیا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ 2 ہفتوں کی مسلسل محنت سے شہزادے اور شہزادی کی تصویر کینونس میں اتار کر حقیقت کا رنگ دیا ہے۔ پورٹریٹ میں برطانوی شاہی جوڑے کے چہروں کو پینٹ کرنے کے لئے مصورہ کو یورپی آرٹسٹ سے مشاورت بھی کرنی پڑی۔

تقریبا 60 سال قبل جب صدر جنرل ایوب خان نے ملکہ الزبتھ کو پاکستان کا دورہ کرنے کی دعوت دی تھی تو انہوں نے اس شرط پر قبول کی کہ انہيں سوات کی سیر کرائی جائے گی۔ یہاں کے باسی اب ملکہ ایلزبتھ کے پوتے شہزادہ ولیم اور شہزادی کیٹ مڈلٹن کے دورے کے منتظر ہیں۔

سن 1961 کی شديد سرديوں ميں ملکہ کے استقبال کے لیے ہزاروں لوگ آئے تھے۔ سوات کے اس سفید محل ميں ملکہ نے تين دن گزارے تھے،محل کی دیواروں پر آج بھی يادگار تصاویر لگی ہيں،وہاں کے پرانے باسیوں کو آج بھی وہ لمحات یاد ہیں۔

شدید برف باری کی وجہ سے اس وقت ملکہ برطانيہ الزبتھ دوئم وادی کےچند علاقوں کی سیر نہیں کرسکیں تاہم اب سوات کے شاہی خاندان کی خواہش ہے کہ ملکہ کا پوتا ان واديوں کی مکمل سير کرے۔

اس سے قبل 1996 ميں شہزادی ڈيانا عمران خان کی خصوصی دعوت پر تين روزہ نجی دورے پر پاکستان آئی تھيں۔ تاہم انھيں سرکاری مہمان کا درجہ ديا گيا اور لاہور ميں بھرپور استقبال کيا گيا۔

اس دورے میں انھوں نے شوکت خانم میموریل کینسر اسپتال کے لیے چندہ مہم میں شرکت کی تھی اور 24 فروری کو واپس لندن روانہ ہوگئی تھیں۔

سال 2006ء میں ولیم کے والد شہزادہ چارلس اپنی اہلیہ ڈچز آف کورن وال کمیلا پارکر کیساتھ اکتوبر 2005ء کے زلزلہ سے متاثرہ علاقوں کا دورہ کرنے پاکستان آئے۔

برطانيہ کے شاہی جوڑے کی پاکستان آمد کے موقع پرلاہور کی قدیم وتاريخی بادشاہی مسجد کے خطيب مولانا عبالخبيرآزاد بھی پرامید ہیں کہ شہزادہ وليم اپنے والدين کی طرح مسجد کا دورہ کريں گے۔

بادشاہی مسجد کے خطيب کے والد نے 1991 ميں ليڈی ڈيانا کا استقبال اسی تاریخی مسجد ميں کيا تھاجبکہ 2006 میں پرنس چارلس بھی یہاں آئے تھے۔

 

 

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
متعلقہ خبریں
 
 
 
 
 
 
 
Pakistan ,British ,royal couple, Prince William , Kate Middleton, Pakistan