ہوم   >  پاکستان

فضل الرحمان کا 31 اکتوبر کو اسلام آباد پہنچنے کا اعلان

7 days ago

مولانا فضل الرحمان کا کہنا ہے کہ 27 اکتوبر کو کشمیریوں سے اظہار یکجہتی اور یوم سیاہ ہوگا، ملک بھر سے قافلے 31 اکتوبر کو دارالحکومت پہنچیں گے۔

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے 27 اکتوبر کو حکومت مخالف آزادی مارچ شروع کرنے کا اعلان کیا ہے، جس میں شرکت کیلئے مسلم لیگ ن اور پیپلزپارٹی کو بھی دعوت دی گئی ہے تاہم دونوں جماعتوں نے تاحال شمولیت سے متعلق حتمی فیصلہ نہیں کیا، پشتونخوا ملی عوامی پارٹی آزادی مارچ میں شرکت کا اعلان کرچکی ہے۔

صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے جے یو آئی (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کا کہنا ہے کہ 27 اکتوبر کو آزادی مارچ کا آغاز ہوگا، اس دن کا انتخاب اس لئے کیا کہ کشمیریوں کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کریں گے، جس کے بعد قافلے اسلام آباد کی طرف روانہ ہوں گے، پاکستان کے بہت سے اضلاع اسلام آباد سے کافی فاصلے پر ہیں، کراچی، کوئٹہ سمیت دیگر علاقوں سے قافلوں کو پہنچنے میں وقت لگے گا۔

مزید جانیے : فضل الرحمان غلط پتے کھیل رہے ہیں،فردوس اعوان

صحافی کے سوال پر انہوں نے کہا کہ ہم نے حساب لگایا ہے دور دراز علاقوں سے قافلوں کو پہنچنے میں 3 4 دن لگیں گے، ملک بھر سے قافلے 31 اکتوبر کو دارالحکومت میں داخل ہوں گے، پورے ملک کے عوام بیک وقت اندر جائیں گے۔

جے یو آئی سربراہ کا مزید کہنا تھا کہ اسلام آباد کے قریب کے علاقوں کے عوام 27 اکتوبر کو اپنے مظاہرے کریں گے، کشمیریوں سے یکجہتی اور یوم سیاہ کے پروگرام صوبائی قیادت کے حوالے کردیئے ہیں، شہروں کا انتخاب وہ خود کریں گے، جہاں سے عوام قافلوں کی صورت میں اسلام آباد کی طرف مارچ کریں گے۔

ONLINE PHOTO

اسلام آباد پہنچنے کیلئے 31 تاریخ کے انتخاب کے سوال پر انہوں نے کہا کہ بلوچستان سے آنیوالے کچھ قافلے سندھ اور کچھ پنجاب میں کراچی سے نکلنے والے قافلے سے ملیں گے۔ یوم کشمیر (27 اکتوبر کو) خطاب سے متعلق سوال پر ان کا کہنا تھا کہ ابھی اس پر کوئی فیصلہ نہیں ہوا۔

یہ بھی پڑھیں : فضل الرحمان اپنی ڈوبتی سیاست بچا رہے ہیں، وزیراعظم

دوسری جانب جمعیت علمائے اسلام (ف) نے اسلام آباد کے ڈی چوک پر آزادی مارچ کیلئے چیف کمشنر اسلام آباد کو باضابطہ درخواست دے دی۔ عبدالغفور حیدری کا کہنا ہے کہ اگر حکومت جمہوریت کی دعویدار ہے تو آئینی حق کیلئے اجازت کی کیا ضرورت، اجازت نہیں مانگی، اطلاع دی ہے، انتظامیہ سیکیورٹی اقدامات کرے، قافلے روکنے کی حماقت کی گئی تو ملک بھر میں دھرنے ہوں گے۔

اس سے قبل مولانا فضل الرحمان کہہ چکے ہیں کہ غیر جمہوری طریقے سے آنیوالی حکومت کا خاتمہ اٹل ہے، اس جنگ کا میدان پورا ملک ہوگا، پورے ملک سے انسانوں کا ایک سیلاب آرہا ہے، جعلی حکمران اس میں تنکے کی طرح بہہ جائیں گے۔

مزید جانیے : حکومت نے فضل الرحمان کو قانونی نوٹس بھیج دیا

حکومتی وزراء کی جانب سے مولانا فضل الرحمان کے آزادی مارچ کی کھل کر مخالفت کی جارہی ہے، علی امین گنڈا پور یہ تک کہہ چکے ہیں کہ مولانا پاکستان مخالف مہم چلا رہے ہیں۔ فیاض الحسن چوہان نے کہا کہ فضل الرحمان چائے کی پیالی میں طوفان مچا رہے ہیں جبکہ معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان کا کہنا ہے کہ فضل الرحمان غلط پتے کھیل رہے ہیں، ناکام ہوں گے۔

 

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
متعلقہ خبریں
 
 
 
 
 
 
 
JUIFI, PMLN, PTI, PPP, KASHMIR DAY, ISLAMABAD,