Wednesday, October 27, 2021  | 20 Rabiulawal, 1443

پاکستان، ترکی اور ملائیشیا کا انگریزی چینل شروع کرنےکا فیصلہ

SAMAA | - Posted: Sep 26, 2019 | Last Updated: 2 years ago
SAMAA |
Posted: Sep 26, 2019 | Last Updated: 2 years ago

پاکستان، ترکی اور ملائیشیا نے اسلام مخالف پروپیگنڈے اور سرگرمیوں کے چیلنجز سے نمٹنے کےلیے مشترکہ طور پر انگریزی چینل شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

وزیراعظم عمران خان نے اپنی ٹویٹ میں اعلان کیا کہ یہ فیصلہ ترکی کے صدر رجب طیب اردوان اور ملائیشیا کے وزیراعظم مہاتیر محمد کے ساتھ نیویارک میں ملاقات کے دورن کیا گیا۔

یہ چینل ’’اسلاموفوبیا‘‘ سے جنم لینے والے چیلنجز کے مقابلے اور مذہب ’’اسلام‘‘ کے حقیقی تشخص کو اجاگر کرنے کےلیے مختص ہوگا۔

وزیراعظم نے مزید کہا کہ مجوزہ چینل سے وہ غلط فہمیاں اور منفی تصورات دور کرنے میں مدد ملے گی جو دوسرے مذاہب کے لوگوں کو مسلمانوں کے خلاف اکٹھا کرتے ہیں اوراس اقدام سے ہمیں توہین رسالت کے معاملے پر آواز بلند کرنے اور اپنی کوششوں کو عملی شکل دینے میں مدد ملے گی۔

عمران خان نے کہا کہ اسلامی تاریخ سے متعلق سیریز اور فلموں کی تیاری سے ہم نہ صرف اپنے عوام بلکہ دنیا کو اسلام کی تعلیم دیں گے۔ مجوزہ چینل کے قیام سے مسلمانوں کو میڈیا میں حقیقی نمائندگی ملے گی۔

ملاقات سے قبل پاکستان اور ترکی کی مشترکہ میزبانی میں نفرت انگیز بیانات کے تدارک پر اجلاس ہوا۔ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ بدقسمتی سے انتہا پسندی اور خودکش حملوں کو اسلام سے جوڑا گیا اور نائن الیون کے بعد مسلمانوں کو دہشتگردوں کے ساتھ منسلک کر دیا گیا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube