ہوم   >  پاکستان

مولانافضل الرحمٰن کی شہبازشريف سے ملاقات، آزادی مارچ پرتبادلہ خيال

4 weeks ago

جمعيت علمائے اسلام کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے مسلم ليگ ن کے صدر شہباز شريف سے ان کی رہائش گاہ پر طويل ملاقات کرکے آزادی مارچ ميں شرکت پر قائل کرنے کی کوشش کی۔

شہبازشريف کی رہائش گاہ پر دونوں  رہنماؤں کی ملاقات تقریبا دو گھنٹے تک جاری رہی۔ اس ملاقات ميں ن ليگ کے رہنما اياز صادق، رانا تنوير، احسن اقبال، مريم اورنگزيب  اور مولانا غفور حيدری بھی شريک تھے۔

ملاقات ميں مولانا فضل الرحمٰن نے مسلم ليگ ن کے صدر کو حکومت کے خلاف آزادی مارچ کی تياريوں سے آگاہ کيا۔

ذرائع کے مطابق مولانا فضل الرحمٰن نے کہا کہ ن ليگ آزادی مارچ ميں ہمارا بھرپور ساتھ دے۔ پنجاب کے ہر ضلع سے ليگی کارکن آنے چاہيں۔

شہبازشريف نے مولانا فضل الرحمٰن سے درخواست کی کہ انہيں فيصلے کےلئے 30 ستمبر تک کی مہلت دی جائے۔ اگر پارٹی کی سینٹرل ايگزيکٹو کميٹی نے شرکت کا فيصلہ کرليا تو پورے پاکستان سے کارکن آئيں گے جبکہ فيصلے کے بعد آزادی مارچ اور لاک ڈاون کا اعلان بھی کرينگے۔

اجلاس کے بعد مولانا فضل الرحمٰن اور ن ليگ کے تمام رہنماء ميڈيا سے بات کئے بغير واپس چلے گئے۔

 

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
متعلقہ خبریں