ہوم   >  پاکستان

گرفتاری کی صورت میں بھی مرادعلی شاہ وزیراعلیٰ رہینگے، بلاول

3 weeks ago

نيب نے مراد علی شاہ کو 24 ستمبر کوطلب کرلیا



چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو نے اعلان کردیا کہ گرفتاری کے صورت میں بھی وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کو ان کے عہدے سے نہيں ہٹائيں گے۔


جعلی بينک اکاؤنٹس ميں تحقیقات کيلئے نيب نے وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کو 24 ستمبر کو نيب راولپنڈی ميں طلب کيا ہے۔


اس حوالے سے بلاول بھٹو کا کہنا ہے کہ مراد علی شاہ کی جگہ کسی اور کو مقرر نہیں کیا جائے گا ۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہمارا پہلا، دوسرا اور تیسرا وزیر اعلی مراد علی شاہ ہی ہوگا۔


سماء کے پروگرام 7 سے 8 میں گفتگو کرتے ہوئے تجزیہ کار خالد عظیم کا کہنا تھا کہ اگر وزیراعلیٰ سندھ کو گرفتار کیا جاتا بھی ہے تو قانونی طریقے سے وہ اس وقت تک اپنے عہدے پر قائم رہ سکتے ہیں جب تک ان پر الزام ثابت نہیں ہوتا ۔


قومی احتساب بیورو کے بھیجے گئے سمن میں مراد علی شاہ کو ٹھٹہ اوردادو شوگر ملز کا ریکارڈ ساتھ لانے کی ہدایت کی گئی ہے۔



مزید پڑھیے : سینئر پی پی رہنماء خورشید شاہ گرفتار


 مراد علی شاہ پر دادو، ٹھٹھہ کی شوگر ملز سستے داموں اومنی گروپ کو بیچنے کا الزام ہے۔

اس کے ساتھ وزیراعلیٰ سندھ کو ٹھٹھہ اور دادو شوگر مل کی سبسڈی سے متعلق سوالنامہ سوالنامہ بھی بھیجا گیا ہے جس کا تحریری جواب بھی ساتھ لانے کا کہا گيا ہے۔


مراد علی شاہ کو اس سے پہلے 17 ستمبر کو نیب کراچی میں طلب کیا گیا تھا لیکن انہوں نے مصروفیات کے باعث پیش ہونے سے معذرت کی تھی۔


سابق وزیر اعلی سندھ قائم علی شاہ بھی اسی کیس میں دو بار پیشی بھگت چکے ہیں جبکہ مراد علی شاہ بھی اسی کیس میں ایک بار پہلے بیان ریکارڈ کرا چکے ہیں۔

 

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
متعلقہ خبریں