ہوم   >  پاکستان

گھوٹکی واقعہ جنرل اسمبلی خطاب کوسبوتاژکرنے کی سازش ہے، وزیراعظم

1 month ago

وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ پاکستان میں ہندو برادری کیخلاف ہونے والا تشدد جنرل اسمبلی اجلاس سے خطاب کو سبوتاژ کرنے اور ملک کیخلاف سازش ہے، اقوام متحدہ میں کشمير کا کيس ايسے پيش کروں گا کہ کبھی کسی نے نہ کیا ہوگا۔

وزیراعظم نے طورخم سرحد پر ٹرمینل کا افتتاح کردیا، توسیعی منصوبے پر 16 ارب روپے کی لاگت آئی۔ عمران خان کا کہنا ہے کہ طورخم بارڈر سے وسطی ايشيائی رياستيں بھی فائدہ اٹھائيں گی، اس علاقے سے تجارت بڑھے گی تو عوام کی معاشی حالت بھی بدلے گی، ایک سال کے دوران قبائلی علاقوں کو 150 ارب روپے دیئے، اتنی رقم مجموعی طور پر 40 سال میں بھی نہیں دی گئی۔

وزیراعظم نے کہا کہ اس سرحد کے کھلنے سے پاکستان اور افغانستان کے درمیان تجارت میں اضافہ ہوجائے گا، وسطی ایشیائی ممالک کے دورے کے دوران دیکھا کہ کئی ممالک پاکستان کے ساتھ تجارت کے خواہشمند ہیں، افغانستان میں امن کا سب سے زیادہ فائدہ پاکستان کو ہوگا، 40 سال سے افغانستان کے لوگ انتشار ميں پھنسے ہوئے ہيں، پیر کو نیویارک میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے ملاقات ہوگی جس میں ہم امریکا طالبان امن مذاکرات کی بحالی پر زور دیں گے۔

وزیراعظم عمران خان کا اپنے خطاب میں کہنا تھا کہ اس وقت بھارتی حکومت پر شدید دباؤ ہے، پاکستان سے بھارت جاکر لڑنے والا پاکستان اور کشمیری دونوں کا دشمن ہوگا، بھارتی حکومت پاکستان پر دراندازی کا الزام لگاتی رہی ہے، بھارت کی بدقسمتی ہے کہ اس پر انتہاء پسند ہندوؤں نے قبضہ کرلیا، آر ایس ایس کی پالیسی پاکستان اور مسلمانوں کیخلاف ہے۔

انہوں نے واضح کیا کہ انتہاء پسند ذہن ہی 45 دن کرفيو لگاسکتا ہے، مسلمانوں کو ہندوستان ميں انسان نہيں سمجھا جاتا، جب تک کرفيو ختم نہيں ہوتا بھارت سے بات چيت کا کوئی امکان نہيں، کشمير کا کيس ايسے پيش کروں گا کہ کبھی کسی نے نہ کيا ہوگا، ہمارا آئين سب انسانوں کو برابر کے شہری کا درجہ دیتا ہے، گھوٹکی واقعہ جنرل اسمبلی ميں خطاب کو سبوتاژ کرنے کی سازش ہے۔

گھوٹکی میں گزشتہ دنوں نجی اسکول کے مالک پر نبی کریم ﷺ کی شان میں گستاخی کے مبینہ الزام کے بعد حالات شیدہ ہوگئے تھے، اس دوران مشتعل افراد نے اسکول اور مندر میں توڑ پھوڑ کی، حالات پر قابو پانے کیلئے پولیس اور رینجرز کی بھاری نفری علاقے میں تعینات کردی گئی تھی جبکہ جلاؤ گھیراؤ کے الزام میں کئی افراد کو گرفتار کرکے مقدمات بھی درج کرلئے گئے ہیں۔

وزیراعظم نے مزید کہا کہ پچھلے 10 سالوں ميں پاکستان پر 24 ہزار ارب قرضہ چڑھا، جس ملک ميں اپوزيشن کا کوئی نظريہ نہيں ہوتا وہاں اپوزيشن کمزور ہوتی ہے، ان جماعتوں کيخلاف کيسز ہم نے نہيں بنائے، انہوں نے خود ايک دوسرے پر بنائے، اپوزیشن کا مقصد صرف این آر او لینا ہے، اپوزیشن اسی لئے بلیک میلنگ کررہی ہے، جو مرضی کرلیں کسی کو این آر او نہیں دینگے، قومی دولت لوٹنے والوں کا احتساب نہیں کرینگے تو ملک آگے نہیں چل سکتا۔

وزیراعظم سے آرمی چیف کی ملاقات

دوسری جانب وزیراعظم عمران خان سے آج اسلام آباد میں بری فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ نے ملاقات کی، جس میں علاقائی صورتحال میں رونما ہونیوالی تبدیلیوں، مقبوضہ کشمیر کی صورتحال، وزیراعظم کے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس کے سلسلے میں امریکا کے دورے کے حوالے سے بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔

 

 

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
متعلقہ خبریں