ہوم   >  پاکستان

سینئر پی پی رہنماء خورشید شاہ گرفتار

4 weeks ago

پیپلزپارٹی کے سینئر رہنماء خورشید شاہ کو نیب نے گرفتار کرلیا۔ وہ ن لیگ دور حکومت میں قائد حزب اختلاف اور پیپلزپارٹی حکومتوں میں صوبائی اور وفاقی وزراتوں پر بھی تعینات رہے ہیں۔

نیب سکھر اور راولپنڈی کی ٹیم نے اسلام آباد میں مشترکہ کارروائی کرتے ہوئے آمدن سے زائد اثاثوں کے الزام میں پیپلزپارٹی کے سینئر رہنماء اور سابق قائد حزب اختلاف خورشید شاہ کو گرفتار کرلیا۔

خورشید شاہ کو آج نیب میں طلب کیا گیا تھا تاہم وہ پارلیمنٹ میں اپنی مصروفیات کے باعث قومی احتساب بیورو میں پیش نہیں ہوئے۔

ویڈیو دیکھیں : خورشید شاہ کی گرفتاری کے مناظر 

قومی احتساب بیورو (نیب) رکن قومی اسمبلی خورشید شاہ کیخلاف دادو اور سکھر میں جائیداد کی تحقیقات کر رہا ہے، انہیں راہداری ریمانڈ کے بعد سکھر منتقل کیا جائے گا، ان پر زمینوں کے معاملات میں کرپشن کا بھی الزام ہے، پی پی رہنماء پر کوآپریٹو سوسائٹی میں بنگلے کیلئے فلاحی غیر قانونی طور پر اپنے نام کرانے کا الزام عائد کیا گیا ہے۔

خورشید شاہ 1988ء میں سکھر سے پہلی بار سندھ اسمبلی کے رکن منتخب ہوئے جبکہ پیپلزپارٹی کی صوبائی حکومت میں وزیر بھی رہے، انہوں نے 1990ء میں پہلی بار قومی اسمبلی کا انتخاب جیتا، وہ 1993ء، 1997ء، 2002ء، 2008 اور 2013ء کے انتخابات جیت کر ایم این اے منتخب ہوئے۔

خورشید شاہ 1993ء میں بے نظیر حکومت میں وفاقی وزیر رہے جبکہ 2008ء میں گیلانی حکومت میں بھی وزارت افرادی قوت اور اوورسیز پاکستانیز کا عہدہ ان کے پاس تھا۔

پیپلزپارٹی رہنماء قمر زمان کائرہ نے خورشید شاہ کی گرفتاری کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے نیب پر جانبداری کا الزام لگادیا، سماء سے گفتگو میں ان کا کہنا تھا کہ خورشید شاہ انتہائی قابل احترام شخصیت ہیں، ان پر آج تک ایک پائی کا بھی الزام نہیں لگا، آمدن سے زائد اثاثوں کے بے بنیاد الزامات پر انہیں گرفتار کیا گیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ لوگوں کی پگڑیاں اچھالنا نیب کا پرانا وطیرہ ہے، نیب ایک جانبدار ادارہ ہے جو حکومت کے ہاتھوں میں کھیل رہا ہے، پہلے گرفتار کرتے ہیں جواب بعد میں مانگتے ہیں، ان کا مقصد سندھ حکومت کو ختم کرنا ہے، وفاق کے ان ہتھکنڈوں کی بھرپور مذمت کرتا ہوں۔

مزید جانیے : میرے پاس ایک ایکڑ بھی سرکاری زمین ہوئی تو سیاست چھوڑ دونگا، خورشید شاہ

واضح رہے کہ سابق صدر اور ایم این اے آصف زرداری، ان کی ہمشیرہ رکن قومی اسمبلی فریال تالپور سمیت کئی دیگر رہنماء بھی کرپشن اور مالی بے ضابطگیوں کے الزامات میں گرفتار ہیں۔

قومی احتساب بیورو (نیب) رکن قومی اسمبلی خورشید شاہ کیخلاف دادو اور سکھر میں جائیداد کی تحقیقات کر رہا ہے، انہیں راہداری ریمانڈ کے بعد سکھر منتقل کیا جائے گا، ان پر زمینوں کے معاملات میں کرپشن کا بھی الزام ہے۔

 

 

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
متعلقہ خبریں