ہوم   >  پاکستان

نئے ممبران کی تقرری آئین کی خلاف ورزی ہے،الیکشن کمیشن

2 weeks ago

حکومت اور اليکشن کمیشن کے درمیان ڈیڈ لاک




الیکشن کمیشن نے 2  نئے ممبران کا تقرر غیر آئینی قرار دے دیا۔ اسلام آباد ہائيکورٹ ميں جمع کئے گئے جواب میں مؤقف اپنایا ہے کہ تقرری آئین کے آرٹیکل 213 کی خلاف ورزی ہے۔ چیف الیکشن کمشنر ارکان سے حلف لینے سے انکار کرچکے ہیں۔


اليکشن کميشن کے 2 ممبران کی تقرری  پر حکومت اور اليکشن کمیشن کے درمیان ڈیڈ لاک برقرار ہے۔ الیکشن کمیشن نے نئے ارکان کی تقرری غیر آئینی قرار دے دی ہے۔


سیکریٹری الیکشن کمیشن بابر یعقوب نے اسلام آباد ہائیکورٹ میں جواب جمع کرادیا۔ جواب میں کہا گیا کہ صدر مملکت نے کمیشن کے ممبران سندھ اور بلوچستان کے تقرر میں آرٹیکل 213 اے اور بی کی خلاف ورزی کی یہی وجہ ہے کہ چیف الیکشن کمشنر نے نئے ارکان سے حلف لینے سے انکار کیا، آرٹیکل 214 میں ارکان کے حلف کا طریقہ کارموجود ہے، حلف وہ لے سکتا ہے جو بطور رکن تعینات تصور کیا جائے۔


الیکشن کمیشن کے مطابق صدر مملکت کی جانب سے دو ارکان کا تقرر ''تعیناتی'' کے آئینی طریقہ کار میں نہیں آتا،23 اگست کو اس حوالے سے سیکریٹری پارلیمانی امور کو بھی آگاہ کردیا گیا تھا۔ جواب کے ساتھ سپریم کورٹ کے فیصلوں کے حوالے بھی دیئے گئے ہیں۔


واضح رہے کہ حکومت نے7 ماہ بعد الیکشن کمیشن کے دونوں ممبران کا تقرر کیا تھا تاہم اپوزیشن بھی یہ تقرریاں مسترد کرچکی ہے۔

 

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
متعلقہ خبریں