ہوم   >  پاکستان

پاکستان سے جنگ سے پہلے بھارت کو سوچنا ہوگا،صدر

2 months ago

صدر پاکستان ڈاکٹرعارف علوی نے کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر کی خودمختاری کے ساتھ کھلواڑ کرکے بھارت آگ سے کھیل رہا ہے۔ یہ آگ بھارت کی سیکولر چہرے کو بھی جھلسادے گی۔ بین الاقوامی برداری بھارت پر زور ڈال کر مقبوضہ کشمیر میں کی گئی آئینی تبدیلی واپس لے۔

غیرملکی میڈیا کو انٹرویو دیتے ہوئے ڈاکٹر عارف علوی نے کہا کہ اگر بھارتی حکومت آرٹیکل 370 اور 35 اے کو ختم کرکے  مقبوضہ کشمیر کی صورتحال میں بہتری کا سوچ رہی ہے تو وہ احمقوں کی جنت میں رہتی ہے۔بھارت نے آئینی تبدیلی کرکے دہشت گردی کو ہوا دی اور پاکستان اس کا ذمہ دار نہیں ہوگا۔

انھوں نے کہا کہ سلامتی کونسل میں کشمیر سے متعلق خصوصی اجلاس کے بعد کوئی اعلامیہ جاری نہ ہونے سے پہلے ہی کافی بیانات جاری کئے جاچکے ہیں۔مسئلہ کشمیر کافی عرصے بعد بین الاقوامی حیثیت اختیار کرگیا ہے۔

صدر مملکت کا کہنا تھا کہ بھارت نے سلامتی کونسل کی متعدد قراردادوں کی خلاف ورزی کی ہے اور پاکستان کے ساتھ مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے مذاکرات سے بھی انکار کرتا رہا ہے۔ انھوں نے سوال اٹھایا کہ بھارت کب تک مذاکرات سے بھاگتا رہے گا؟ ان کا کہنا تھا کہ شملہ معاہدے کے بعد بھی بھارت مذاکرات سے انکار کرتا رہا ہے۔

انھوں نے خدشہ ظاہر کیا کہ بھارت کشمیر کے خطے پر قابض ہونا چاہتا ہے مگر ایسا ممکن نہیں ہوگا۔پاکستان اس معاملے کو بین الاقوامی سطح پر اجاگر کرتا رہے گا۔ کشمیر میں کرفیو اٹھائے جانے کے بعد وہاں کی عوام اپنے عزائم ظاہر کریں گے۔

ڈاکٹر عارف علوی نے واضح کیا کہ پاکستان بھارت کے ساتھ جنگ نہیں چاہتا تاہم بھارت پلوامہ حملے جیسے واقعے کرواکر پاکستان پر الزام عائد کرسکتا ہے۔ بھارت کی پاکستان سے جنگ کی خواہش ہے تاکہ بھارت کو ایسا کرنے سے پہلے سوچنا ہوگا۔ بھارت کے لیے یہ راستہ خطرناک ہوگا، اگر بھارت نے جنگ مسلط کی تو پاکستان اپنے دفاع کا حق رکھتا ہے۔

 
TOPICS:

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
متعلقہ خبریں