ہوم   >  پاکستان

امان اللہ زرکزئی کے قتل سے تعلق نہیں، ثناء اللہ زہری

1 month ago

سابق وزیراعلیٰ بلوچستان سردار نواب ثناء اللہ زہری نے میر امان اللہ کے قتل میں ملوث ہونے ہونے کا الزام مسترد کردیا، کہتے ہیں کہ میرا یا میرے خاندان کے کسی بھی فرد کا امان اللہ زرکزئی اور دیگر کے قتل سے کوئی تعلق نہیں۔

سابق وزیراعلیٰ بلوچستان اور مسلم لیگ ن کے رہنماء نواب ثناء اللہ زہری نے خضدار میں قبائلی عمائدین اور دیگر کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ چند روز قبل بلبل زہری میں میر امان اللہ زرکزئی اور ان کے 4 ساتھی حملے میں جاں بحق ہوگئے تھے، وہ میرے ماموں ہونے کے ساتھ میرے بیٹے نواب زادہ سکندر علی خان زہری، بھائی نوابزادہ میر مہر اللہ خان زرکزئی اور بھتیجے میر زیب زہری کی شہادت کے مقدمہ میں انسداد دہشت گردی کی عدالت سے اشتہاری بھی تھے، انہیں عدالتوں سے باقاعدہ سزائیں بھی سنائی گئی تھیں۔

نواب ثناء اللہ زہری نے کہا کہ بلا تحقیق اور سازش کے تحت اس مقدمہ میں ہمیں منصوبہ ساز قرار دیا گیا ہے، میں اس الزام کی واضح طور پر تردید کرتا ہوں کہ میرا یا میرے کسی رشتہ دار کا میر امان اللہ زرکزئی اور ان کے ساتھیوں کے قتل سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ میر امان اللہ خان زرکزئی کے خاندان کی دیگر قبائل کے ساتھ بھی دشمنیاں چلی آرہی تھیں۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ میر امان اللہ خان کو بلوچستان نیشنل پارٹی کے سربراہ و سابق وزیراعلیٰ بلوچستان سردار اختر مینگل نے اکسایا اور عام انتخابات میں انہیں آزاد گھومنے کا مشورہ دیا، جسے ہم اپنے زخموں پر نمک چھڑکنے کے مترادف سمجھتے ہیں۔

چیف آف جھالاوان نواب ثناءاللہ خان زہری نے الزام لگاتے ہوئے مزید کہا کہ مینگل قبیلہ میرے لئے قابل احترام ہے مگر شاہیزئی نے آج سے نہیں گزشتہ 50 سالوں سے زرکزئی خاندان کیخلاف سازشیں کی ہیں۔

ایک سوال کے جواب میں چیف آف جھالاوان کا کہنا تھا کہ میں جھالاوان، ساراوان، افغانستان، سندھ اور دیگر علاقوں میں آباد بلوچ قبائل کا عنقریب جرگہ بلاؤں گا جس میں بلوچ قوم کو بتاؤں گا کہ اختر شاہی زئی کس طرح زرکزئی قبیلے کو دست و گریبان کرنے کی منصوبہ بندی میں ملوث ہیں۔

 

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
متعلقہ خبریں